الیکشن کمیشن نے بائیو میٹرک سسٹم اور الیکٹرانک ووٹنگ کیلئے وقت مانگ لیا

الیکشن کمیشن نے بائیو میٹرک سسٹم اور الیکٹرانک ووٹنگ کیلئے وقت مانگ لیا

  



 اسلام آباد (آئی این پی) پارلیمنٹ کی ذیلی کمیٹی برائے انتخابی اصلاحات کے اجلاس میں الیکشن کمیشن کے حکام نے بائیو میٹرک سسٹم اور الیکٹرانک ووٹنگ کے حوالے سے مزید وقت مانگ لیا، ذیلی کمیٹی کے کنوینئرزاہد حامد نے کہا کہ انتخابی ٹربیونلز کا نیا طریقہ کار وضع کرنے کا فیصلہ کیا ہے، جس کے تحت دونوں فریقین کی رضا مندی سے الیکشن پٹیشن کی سماعت اور مدت کا تعین کیا جائے گا جبکہ انتخابی ضابطہ اخلاق یک خلاف ورزی ثابت ہونے پر امیدوار نا اہل ہو جائے گا، تحریک انصاف کے ارکان کی اجلاس میں شرکت کرنے یا نہ کرنے کا فیصلہ پارلیمنٹ کی خصوصی کمیٹی برائے انتخابی اصلاحات کرے گی۔ بدھ کو پارلیمنٹ کی ذیلی کمیٹی برائے انتخابی اصلاحات کا ان کیمرہ اجلاس کنوینئر زاہد حامد کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہاؤس میں منعقد ہوا۔ اجلاس کے بعد کنوینئر زاہد حامد نے صحافیوں کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ ذیلی کمیٹی کے اجلاس میں الیکشن کمیشن آف پاکستان نے بائیو میٹرک سسٹم اور الیکٹرانک ووٹنگ پر بریفنگ کیلئے مزید وقت مانگ لیا، لہٰذا مذکورہ بریفنگ اب آئندہ اجلاس میں دی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ ذیلی کمیٹی کے اجلاس میں انتخابی ٹربیونلز کا نیا نظام وضع کرنے کا فیصلہ کیا گیا، جس کے تحت دونوں فریقین کی رضامندی سے انتخابی پٹیشن کی سماعت اور مدت کا تعین کیا جائے گا۔ اس کے علاوہ فیصلہ کیا گیا کہ دوران انتخابات ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی ثابت ہونے پر امیدوار نااہل ہو جائے گا۔ ایک سوال کے جواب میں زاہد حامد نے کہا کہ تحریک انصاف کے ارکان کی ذیلی کمیٹی کے اجلاس میں شرکت کا فیصلہ پارلیمنٹ کی خصوصی کمیٹی برائے انتخابی اصلاحات کرے گی۔ ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ذیلی کمیٹی کے ارکان کو بریفنگ کے دوران نادرا کے چیئرمین عثمان مبین نے بتایا کہ بلاک کئے گئے 20ہزار شناختی کارڈوں کے کیسوں کا فیصلہ کرلیا ہے جبکہ بقیہ پر بھی کام جاری ہے۔ اس پر ذیلی کمیٹی برائے انتخابی اصلاحات نے چیئرمین نادرا کو ہدایت کی کہ بلاک کئے گئے شناختی کارڈوں کا معاملہ جلد نمٹایا جائے۔ ذیلی کمیٹی

مزید : صفحہ آخر


loading...