بجلی کی ڈیمانڈ میں اضافہ ٹرانسمیشن سسٹم کے بریک ڈاؤن خطرہ مزید بڑھ گیا

بجلی کی ڈیمانڈ میں اضافہ ٹرانسمیشن سسٹم کے بریک ڈاؤن خطرہ مزید بڑھ گیا

  



 لاہور(کامرس رپورٹر)بجلی کی ڈیمانڈ میں اضافہ سے ٹرانسمیشن سسٹم کے بریک ڈاؤن خطرہ مزید بڑھ گیا ۔ وزارت بجلی و پانی نے کسی بھی بڑے سانحہ کے خطرہ کے پیش نظر بجلی کی پیداوار میں اضافہ کیلئے وزارت خزانہ سے فوری طور پر 25 ارب روپے کی ڈیمانڈ کردی ۔ رقم ادائیگیوں کے لئے طلب کی گئی ہے ۔ ڈیمانڈ میں اضافہ کے باعث شارٹ فال اور پیداوار میں صرف پندرہ سو میگا واٹ کا فرق رہ گیا ۔ شارٹ فال ساڑھے چھ ہزار میگاواٹ سے بھی تجاوز کر گیا ۔ شارٹ فال میں اضافہ کے باعث لوڈ شیڈنگ اور مرمت کے نام پر بجلی کی بندش کے دورانیہ میں اضافہ کر دیا گیا ۔ لوڈ شیڈنگ کے دورانیہ میں ایک سے دو گھٹنے تک کا اضافہ کیا گیا ہے ۔ شدید گرمی سے قبل ہی لوڈ شیڈنگ کا جن مکمل بے قابو ہو گیا ہے اور دورانیہ بڑھ کر بین گھنٹے تک پہنچ گیا ہے ۔ زیادہ لوڈ شیڈنگ والے مختلف شہروں میں احتجاج کا سلسلہ بھی شروع ہو گیا ہے ۔ گزشتہ روز شہروں میں چودہ گھنٹے اور دیہی علاقوں میں بیس گھنٹے تک کی لوڈ شیڈنگ کی گئی ۔ مرمت کے نام پر تمام سب ڈویژنوں میں تین و چار فیڈرز اٹھ سے دس گھنٹے کے لئے بند رکھے گئے ۔ بار بار لوڈ شیڈنگ کے باعث پانی کی قلت بھی شروع ہو گئی۔ انرجی مینجمنٹ سیل کے ذرائع کے مطابق گزشتہ روز بجلی کی مجموعی ڈیمانڈ بڑھ کر 14940 میگاو اٹ تک پہنچ گئی جبکہ پیداوار 8310 میگاواٹ طلب ور سد میں 6630 میگا واٹ کا فرق ر ہا ۔ بجلی

مزید : صفحہ آخر


loading...