مختلف الزامات پر پولیس افسروں کے عہدوں میں تنزلی، سروس ضبط اور ترقیاں روکنے کی سزائیں

مختلف الزامات پر پولیس افسروں کے عہدوں میں تنزلی، سروس ضبط اور ترقیاں روکنے ...

  



لاہور(کرائم سیل) قائم مقام ڈی آئی جی انویسٹی گیشن رانا ایاز سلیم نے آرڈرلی روم میں انسپکٹر سمیت10 تھانیداروں کو مختلف الزامات کے تحت جاری شوکاز نوٹسز کے جوابات سنتے ہوئے فرائض میں غفلت ، کرپشن ،اختیارات سے تجاوز اور ناقص تفتیش پر عہدوں میں تنزلی ،سروس کی ضبطگی اور سالانہ ترقیاں روکنے سمیت متعددسزائیں دی ہیں ۔تفصیلات کے مطابق اُنہوں نے ڈکیتی کے مقدمہ میں ملوث ملزموں کی گرفتاری میں ناکامی ،کرپشن اور فرائض سے غفلت پر انچارج انویسٹی گیشن لوئر مال سب انسپکٹر محمد فاروق اور انچارج انویسٹی گیشن ہےئر سب انسپکٹر محمد نوازکے عہدوں میں تنزلی کرتے ہوئے سب انسپکٹر سے اے ایس آئی بنادیا ہے۔اسی طرح انچارج انویسٹی گیشن سندر انسپکٹر ارشد علی کو قتل کے مقدمہ میں ڈی این اے سمیت دیگر سیمپلز پنجاب فرانزک لیبارٹری بھجوانے میں دانستہ تاخیر پر 2 سال کی سروس ضبط کرنے کی سزا دی ہے۔رانا ایاز سلیم نے سب انسپکٹر نذیر احمد کو قتل کے مقدمہ میں نامزد ملزمان کو گرفتار نہ کرنے پردو سال کی سروس ضبط کرنے اور ایک سالانہ ترقی روکنے کی سزاد ی ہے۔اُنہوں نے اشتہاریوں کی گرفتاری میں ناکامی اور ناقص تفتیش پر سب انسپکٹر منیر احمد،سب انسپکٹرمحمد نصراللہ اور اے ایس آئی شہباز احمد کی ایک ایک سال کی سروس ضبطگی کی سزادی ہے۔ اسی طرح انہوں نے ناقص تفتیش اور فرائض میں غفلت برتنے پر سب انسپکٹر محمد اسلم ، اے ایس آئی اصغر علی اوراے ایس آئی محمد سلیم کو سنشور اور وارننگ کی سزائیں دی ہیں۔

مزید : علاقائی


loading...