پٹرول پھینک کر آگ لگائے جانے سے جھلسنے والا یتیم لڑکا دم توڑ گیا، چچا پر الزام کی تردید

پٹرول پھینک کر آگ لگائے جانے سے جھلسنے والا یتیم لڑکا دم توڑ گیا، چچا پر ...
پٹرول پھینک کر آگ لگائے جانے سے جھلسنے والا یتیم لڑکا دم توڑ گیا، چچا پر الزام کی تردید

  



لاہور(کر ائم سیل) گلشن راوی میں نامعلوم افراد کے ہاتھوں پٹرول پھینک کر آگ لگائے جانے کے نتیجے میں جھلسنے والا 14سالہ یتیم لڑکا ہسپتال میں دم توڑ گیا، باپ کے مرنے کے بعد اپنے بیٹے کو چھوڑ کر جانے والی ماں اپنے زخمی بیٹے کو ملنے کے لیے ترستی رہی لیکن لڑکے نے آخری سانسوں تک ماں سے ملنے سے انکار کر دیا، پولیس نے پوسٹ مارٹم کاعمل مکمل ہونے کے بعد لاش ورثا کے حوالے کر دی۔ بتایا گیا ہے کہ چند روز قبل گلشن راوی 60فٹ روڈ گلی نمبر1 کے رہائشی 14سالہ نعمان مسیح کو موٹرسائیکل سوار دو نامعلوم افرادنے پٹر ول چھڑک کرآگ لگا دی اورفرار ہو گئے تھے۔ نعمان کئی رو ز ہسپتال میں موت و حیات کی کشمکش میں مبتلا رہنے کے بعد گزشتہ روز زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیا۔ پولیس نے لاش اپنے قبضے میں لیکر مردہ خانے میں منتقل کردی ۔ جو بعدازاں پوسٹ مارٹم کا عمل مکمل ہونے کے بعد ورثا کے حوالے کردی گئی واضح رہے پولیس نے نعمان کے چچا کی مدعیت میں نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کیا تھا جس کی تفتیش جاری ہے اس سلسلے میں تاحال کوئی ملزم گرفتار نہ ہو سکا ہے نعمان کے نانا ہیرا مسیح نے الزام لگایا تھا کہ مدعی ندیم نے خوداپنے بھتیجے کو جلایا تھا جبکہ ندیم نے پولیس کو دئے گئے بیان میں بتایا کہ نعمان کا باپ رفاقت مسیح ایک عرصہ قبل فوت ہو گیا تو اس نے نعمان کو اپنے بیٹوں کی طرح پالا ا ور وہ مجھے چاچا نہیں پاپا کہتا تھا ،نعمان کی والدہ شازیہ نے8سال قبل نعمان کو چھوڑکر کسی اور سے شادی کرلی تھی، نعمان بڑا ہوا تو اسے اپنی ماں سے نفرت ہو گئی ۔گزشتہ روز بھی نعمان کی ماں شازیہ اس کو ملنے لے لیے ہسپتال آئی مگرنعمان نے ملنے سے انکار کر دیاہیرا مسیح ہمیں تنگ کرنے کے لیے ہم پر الزام لگا رہا ، کوئی اپنی اولاد کو کیسے جلا سکتا ہے جبکہ نعمان نے پولیس کو دئے گئے بیان میں بتایا تھا کہ اس کو دو نامعلوم موٹرسائیکل سواروں نے پٹرول چھڑک کرآگ لگائی تھی اور اس کا نانا اوروالدہ جھوٹ بول رہی ہے ۔

مزید : علاقائی


loading...