تیری جان میری جان ‘ پاکستان ‘ پاکستان ‘ سری نگر میں کشمیریوں کے نعرے سبز ہلالی پرچم ہلا دیا

تیری جان میری جان ‘ پاکستان ‘ پاکستان ‘ سری نگر میں کشمیریوں کے نعرے سبز ...

  



 سری نگر (مانیٹرنگ ڈیسک،آئی این پی )سری نگر کے باشندوں نے ایک ریلی میں سبز ہلالی پرچم لہرا کر ایک بار پھر پاکستان کے ساتھ لگاؤ کا اظہار کیا جس سے بھارتی حکمران اورمیڈیا سیخ پا ہوگئے ۔تفصیلات کے مطابق سری نگر میں بھارتی مظالم کے خلاف ریلی نکالی گئی جس کے شرکاء نے پاکستانی پرچم اٹھا رکھے تھے،وہ بھارت کے خلاف نعرے بازی کرتے رہے اور پاکستانی پرچم لہراتے رہے۔ پاکستانی جھنڈا لہرانے پر کشمیری رہنماء مسرت عالم اور علی گیلانی کے خلاف مقدمہ درج،مسرت عالم کو گرفتار کر لیا گیا، ریلی کے شرکاء نے حافظ سعید زندہ باد کے نعرے بھی لگائے شرکاء کی جانب سے ایسا کئے جانے پر بھارتی میڈیا سیخ پا ہو گیا اور دیکھتے ہی دیکھتے سب ٹی وی چینلز کو جیسے آگ لگ گئی۔جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کل جماعتی حریت کانفرنس (گ)کے چیئرمین سید علی گیلانی نے کہا کہ ریاست جموں وکشمیر میں چہروں کی تبدیلی ہمارے لیے کوئی معنی نہیں رکھتی ،جب تک کہ کشمیر کی متنازعہ حثیت کو تسلیم نہیں کیا جاتا ،کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ مفتی سعید کشمیریوں سے مخلص ہیں تواعلان کریں کہ کشمیر بھارت کا اٹوٹ انگ نہیں بلکہ عالمی سطح پرتسلیم شدہ متنازعہ علاقہ ہے ۔کشمیر میں ہندو پنڈتوں کی آبادکاری ریاست کے اندر مسلم اکثریت کو اقلیت میں بدلنے کی بھارتی سازش ہے۔جموں وکشمیر میں مسلمان ،سکھ،پنڈت اور دیگر مذاہب کے لوگ صدیوں سے بھائیوں کی طرح رہ رہے ہیں۔ بھارت نے جموں وکشمیر پر غاصبانہ قبضہ کر رکھا ہے ۔کشمیریوں نے اس غاصبانہ قبضہ کو نہ پہلے تسلیم کیا اور نہ آئندہ کریں گے۔پاکستان کے ساتھ کشمیری عوام کا نظریاتی اور دینی رشتہ ہے ۔مسئلہ کشمیر پاکستان اور ہندوستان کے درمیان تنازعہ نہیں بلکہ یہ سہ فریقی مسئلہ ہے۔کشمیری اس مسئلہ کے بنیادی اور اصل فریق ہیں۔ ہم بھارت سمیت پوری دنیا پر واضح کر دینا چاہتے ہیں کہ جب تک اقوام متحدہ کی منظور شدہ قراردادوں کے مطابق ایک کروڑ60لاکھ کشمیریوں کو حق خود ارادیت نہیں مل جاتا،اس وقت تک ہماری جدو جہد آزادی جاری رہے گی اورہم اپنے پیدائشی حق ،حق خود ارادیت کے لیے قربانیوں کا سفر جاری رکھیں گے ۔اقوام متحدہ مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے حق خود ارادیت پر مبنی 18قراردادیں پاس کی ہیں ۔سید علی رضا گیلانی کے خطاب کو سرینگر سے مرکزی ایوان صحافت مظفرآباد میں ٹیلی فون پر براہ راست نشر کیا گیا ۔اس موقع پر اے پی ایچ سی کے کنوینئر غلام محمد صفی ،پاسبان حریت جموں وکشمیر کے رہنماعزیر احمد غزالی جماعت الدعوہ کے امیر مولانا عبدالعزیز علوی ،جماعت اسلامی کے رہنما سید سلیم حسین شاہ، پیر زادہ محمد افسر خان ، راجہ فرخ ممتاز، وکلاء طلباء تاجر اور مہاجرین رہنماء موجود تھے ۔سید علی گیلانی کا کہنا تھا کہ مودی ڈاکٹرائن خطہ کے لیے انتہائی خطرناک ہے ۔اس وقت مقبوضہ کشمیر کی کٹھ پتلی سرکار کشمیر ی عوام کو دھوکا دے رہی ہے ۔7لاکھ قابض فوج کی موجودگی میں کشمیر کے اندر امن قائم نہیں ہو سکتا۔ مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی افواج کو دیے گئے لا محدود اختیارات بھارتی فوج کو کشمیریوں پر مظالم کا سرکاری سرٹیفکیٹ ہیں ۔انہوں نے مفتی سعید کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر بھارت کا تاج نہیں بلکہ بھارت نے کشمیر کو تاراج کر رکھا ہے ۔ ان کا کہنا تھاکہ کشمیری نوجوانوں نے متحد و منظم ہو کر کٹھ پتلی حکومتوں ،جماعتوں ،تنظیموں اور بھارتی قابض افواج کے ایجنڈے کا مقابلہ کرنا ہے اور انہیں شکست فاش دینا ہے ۔یہ چہرے اور ہاتھ بدل بدل کر آرہے ہیں اور کشمیر کو بھارت کی غلامی میں دھکیل رہے ہیں۔شہداء کشمیر کو کبھی فراموش نہیں کر سکتے،ان کا خون رنگ لائے گا۔بابا حریت نے اعلان کیا کہ جدوجہد آزادی کو جدید خطوط سے ہم آہنگ کے لیے جلد ہی آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کیا جائیگا۔ہم بھارت سمیت ساری دنیا پر واضع کردینا چاہتے ہیں کہ مسئلہ کشمیر کا حل صرف و صرف حق خود ارادیت ہے ۔حق خود ارادیت کے حصول تک کشمیری عوام اس جدوجہد کو جاری رکھے گی ۔آزادی کے حصول کے لیے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کیا جائے گا۔انہوں نے دو روز قبل ترال میں شہید کیے گئے دو بے گنا ہ نوجوانوں کو خراج عقیدت پیش کیا اور ان کے لواحقین کے لیے صبر کی دعا کی ۔

مزید : صفحہ اول


loading...