یمن میں ہادی کی معزول حکومت ہی قانون ہے ‘ پاکستان اس کی بحالی چاہتا ہے ‘ پرویز رشید

یمن میں ہادی کی معزول حکومت ہی قانون ہے ‘ پاکستان اس کی بحالی چاہتا ہے ‘ ...

  



 اسلام آباد (آئی این پی)وفاقی وزیر اطلاعات و نشریا سینیٹر پرویز رشید نے دوٹو ک الفاظ میں کہا ہے کہ پارلیمنٹ کا فیصلہ ہی پاکستان کا فیصلہ ہے،، پارلیمنٹ ہی کسی قوم کی ترجمان ہوتی ہے، پاکستان کا اصولی موقف ہے کہ یمن میں منصور ہادی کی معزول حکومت وہاں کی جائز اور قانونی حکومت ہے، پاکستان اس کی بحالی چاہتا ہے، بحالی کے بعد یمن کی حکومت کی ذمہ داری ہو گی کہ وہ وہاں کی خانہ جنگی میں شریک قوتوں کے ساتھ مصالحت کرے،حرمین شریفین کے تحفظ کے حوالے سے ہم اپنے فرائض سے آگاہ ہیں اور وقت آنے پر اپنا فرض ضرور ادا کریں گے ،عمران خان نے سابق نگران وزیر اعلیٰ نجم سیٹھی پر انتخابات میں 35 پنکچر لگانے، سابق چیف جسٹس افتخار چوہدری پر انتخابی نتائج تبدیل کرنے اور نجی چینل پر دھاندلی کرانے کے الزامات عائد کئے تھے،مجھ سمیت ساری قوم منتظر ہے کہ خان صاحب ان تینوں الزامات کے جوڈیشل کمیشن میں کیا ثبوت پیش کرتے ہیں، کراچی میں قیام امن کے لئے ٹارگٹڈ آپریشن کی کامیابی اور شہر کو امن کا گہوارہ بنانے کیلئے NA-246کے ضمنی انتخاب میں حصہ نہ لینے کا فیصلہ کیا ہے،چین کے صدر کا دورہ پاکستان کی تعمیر و ترقی کے میگا پراجیکٹس کا باعث معاشی ترقی کے ایک نئے دور کا آغاز ہو گا،وزیر منصوبہ بندی احسن اقبال چینی صدر کے دورہ پاکستان کی تفصیلات سے (آج)قوم کو آگاہ کریں گے۔وہ بدھ کو یہاں ایک مقامی ہوٹل میں ’’امن و بین المذاہب ہم آہنگی‘‘ کے موضوع پر منعقدہ سیمینار سے خطاب ومیڈیا سے بات چیت کر رہے تھے۔سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے سینیٹر پرویز رشید نے کہا کہ پاکستان کا سافٹ امیج بعض عاقبت نا اندیش لوگوں نے پوری دنیا میں اسے تباہ و برباد کیا،حکومت عالمی سطح پر اس امیج کو دوبارہ بحال کرنے کے اقدامات کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اللہ تعالیٰ نے تمام مذاہب کے ماننے والوں کو ایک دوسرے کا وسیلہ بنایا، پاکستان ایک جمہوری ملک ہے یہاں کوئی اقلیت یا اکثریت نہیں یہاں بسنے والے تمام شہری انسان اور پاکستانی ہیں، اسی نظریے پر عمل کرنے میں انسانیت اور پاکستان کی بقاء و استحکام ہے۔ بعد ازاں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے سینیٹر پرویز رشید نے کہا کہ یمن کی خانہ جنگی کے حوالے سے پاکستان کے موقف میں ایک تسلسل موجود ہے، حکومت نے پہلے دن سے ہی یہ موقف اختیار کیا کہ سعودی عرب ہمارا برادر اسلامی ملک ہے اور ہمارے دکھ سکھ کا ساتھی ہے، پاکستان کی ہر مشکل میں سعودیہ نے سب سے بڑھ کر ہماری مدد کی، اب اگر سعودی عرب پر کوئی امتحان آیا تو پاکستان اس کے شانہ بشانہ کھڑا ہو گا۔ حرمین شریفین کے تحفظ کے حوالے سے ہم اپنے فرائض سے آگاہ ہیں اور وقت آنے پر اپنا فرض ضرور ادا کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ روز سلامتی کونسل نے یمن کے بارے میں کو قرار داد منظور کی پاکستان اس کی مکمل حمایت کرتا ہے اور تنازعے بارے عالمی برادری کے فیصلوں کا بھی احترام کرتا ہے، یقیناً پاکستانی عوام اور حکومت کے دل سعودی حکومت کے ساتھ دھڑکتے ہیں اور قومی معاملات پر پوری قوم یک زبان ہے، پارلیمنٹ کی قرار داد کے ذریعے اس اتفاق رائے کا اظہار کر دیا گیا ہے اور پارلیمنٹ ہی کسی قوم کی ترجمان ہوتی ہے، پارلیمنٹ کا فیصلہ ہی پاکستان کا فیصلہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم نے دو روز قبل جو بیان جاری کیا تھا اس میں انہوں نے یہ واضح کر دیا تھا کہ ہم یمن کی معزول حکومت کو وہاں کی جائز اور قانونی حکومت سمجھتے ہیں،اس حکومت کی بحالی کے بعد اسی حکومت کی ذمہ داری ہو گی کہ وہ وہاں کے متحارب فریقوں کے ساتھ امن و امان کیلئے مصالحت کرے۔وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کے دورہ سعودی عرب کے بارے سوال کے جواب میں وزیر اطلاعات پرویز رشید نے کہا کہ سعودی عرب کے ساتھ ہمارے دیرینہ اور قریبی تعلقات ہیں، دونوں طرف سے وفود کا تبادلہ جاری رہتا ہے، یہ سلسلہ قریبی روابط کا ثبوت ہے،سعودی حکومت کے ساتھ قریبی رابطے میں ہیں۔ پی ٹی آئی کی جانب سے دھاندلیوں کے مبینہ ثبوت جوڈیشل کمیشن میں جمع کرانے بارے سوال کے جواب میں پرویز رشید نے کہا کہ تحریک انصاف ہر روز وہی پرانی باتیں دہرا رہی ہے، کسی روز کوئی نئی بات کی تو اس کا ضرور جواب دیں گے، عمران خان نے الزام عائد کیا تھا کہ پنجاب کے سابق نگران وزیر اعلیٰ نجم سیٹھی نے 2013ء کے انتخابات میں 35 پنکچر لگائے، سابق چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے انتخابی نتائج تبدیل کئے اور جیو ٹی وی نے دھاندلی کرائی، مجھ سمیت ساری قوم منتظر ہے کہ خان صاحب ان تینوں الزامات کے کیا ثبوت پیش کرتے ہیں،ابھی تک عمران خان نے صرف الزامات لگائے ہیں کوئی ثبوت سامنے نہیں لائے

مزید : صفحہ اول


loading...