وزیراعلٰی خیبرپختونخوا کی افغان صدر سے ملاقات ‘ دو طرفہ تعلقات کو مضبوط بنانے پر زور

وزیراعلٰی خیبرپختونخوا کی افغان صدر سے ملاقات ‘ دو طرفہ تعلقات کو مضبوط ...

  



 کابل (آئی این پی )وزیر اعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے کابل میں افغان صدر محمد اشرف غنی سے ملاقات کی جس میں دوطرفہ تعلقات،دہشتگردی کے خلاف جنگ اور خطے کی صورتحال سمیت دیگرا ہم امور پرتبادلہ خیال کیا گیا ۔بدھ کو کابل کے صدارتی محل میں ہونے والی اس ملاقات میں دونوں رہنماؤں نے خیبرپختونخوا میں سیکورٹی کی صورتحال کے تناظر میں دونوں ممالک کے درمیان باہمی تعلقات پر تفصیلی گفتگو کی اور دونوں ممالک میں امن کی بحالی کے اقدامات سے دوطرفہ تعلقات کو مضبوط بنانے پر زور دیا ملاقات میں وزیر اعلیٰ کے ہمراہ گیا ہوا خیبرپختونخوا حکومت کا 20 رکنی وفد بھی موجود تھا جن میں صوبائی وزیر معدنیات ضیاء اﷲ آفریدی، وزیر اعلیٰ کے مشیر برائے کھیل و سیاحت امجد آفریدی، معاون خصوصی برائے ماحولیات اشتیاق ارمڑ، معاون خصوصی برائے صنعت عبدالمنعم خان، سینٹر محسن عزیز، صوبائی اسمبلی میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کے پارلیمانی لیڈر سردار اورنگزیب نلوٹھہ، چیف سیکرٹری خیبرپختونخوا امجد علی خان، کے پی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریز کے صدر فواد اسحاق، بعض صوبائی سیکرٹری اور میڈیا کے نمائندے بھی شامل تھے وزیراعلیٰ پرویز خٹک نے ملاقات کے دوران افغان صدر محمد اشرف غنی کو طویل افغان جنگ کے باعث سرحدی صوبہ خیبرپختونخوا پر پڑنے والے منفی اثرات کا تفصیلی ذکر کیا اور ان اثرات سے نکلنے کیلئے دونوں ملکوں کے باہمی سفارتی ، تجارتی اور ثقافتی تعلقات کو پائیدار بنیادوں پر فروغ دینے کی ضرورت پر زوردیا انہوں نے افغان صدر کو پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کے ویژن کے مطابق خیبرپختونخوا میں پی ٹی آئی کی اتحادی حکومت کے اصلاحاتی اقدامات سے بھی آگاہ کیا اور کہا کہ صوبائی حکومت افغانستان کے ساتھ تجارتی تعلقات کو بھی اصلاحات کے دائرے میں لاکر ان تعلقات کو باقاعدہ اور مضبوط بنانا چاہتی ہے اس سے قبل وزیر اعلیٰ پرویز خٹک نے اپنے وفد کے ہمراہ کابل میں سابق افغان صدر حامد کرزئی سے بھی ملاقات کی اور ان سے باہمی دلچسپی کے اُمور پر تبادلہ خیال کیا دریں اثناء وزیراعلیٰ کی قیادت میں صوبائی حکومت کے وفدنے افغان پارلیمنٹ (اولسی جرگہ) کے سپیکر، افغانستان کے وزیر خارجہ ، وزیر مہاجرین و بحالی اور افغانستان چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری سے بھی ملاقاتیں کیں اور ان سے وفاقی حکومت کے تعاون سے صوبے کی سطح پر افغان حکومت کے ساتھ خارجہ اُمور، افغان مہاجرین و سیکورٹی کے اُمور، تجارتی تعلقات اور پارلیمانی روابط کے حوالے سے دو طرفہ تعلقات کو فروغ دینے کے امکانات پر گفتگو کی۔     کابل (آئی این پی) وفاقی وزیر تجارت انجینئرخرم دستگیر خان نے کہا ہے کہ پاکستان افغانستان کے ساتھ دوطرفہ تجارت اور تجارتی اشیاء کی بہتر نقل و حمل میں سہولت کیلئے چمن اور تورخم پر اپنی نوعیت کی شاندار خشک گودیاں(لینڈ پورٹس)قائم کرے گا، پاکستان ڈھانچہ جاتی ترقی اور افغانستان کے ساتھ سڑکوں کو ملانے کیلئے سنجیدگی سے کام کر رہا ہے، جس سے دونوں ممالک کے مابین اقتصادی انضمام میں مدد ملے گی۔ وہ بدھ کو کابل میں راولپنڈی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریز کے زیر اہتمام’’میڈان پاکستان‘‘ نمائش کی افتتاحی تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔ وفاقی وزیر نے تجارت، ثقافت اور دفاع میں افغانستان کے ساتھ دوطرفہ تعاون میں اضافہ کرنے کے عزم کا اعادہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی موجودہ حکومت وزیراعظم نواز شریف کی قیادت میں پاکستان کے ساتھ تجارتی تعلقات بڑھانے میں گہری دلچسپی لے رہی ہے اور اس ضمن میں وزیراعظم پاکستانی سر مایہ کاروں کی افغانستان میں سرمایہ کاری کیلئے حوصلہ افزائی بھی کر رہے ہیں، جس سے دونوں ممالک میں خوشحالی آئے گی۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ پاک افغان ایوان ہائے صنعت و تجارت کو وسطی ایشیاء کے ساتھ ساتھ دنیا بھر کے دیگر اہم ممالک میں اس قسم کی نمائشوں کے انعقاد کیلئے مشترکہ منصوبے شروع کرنے چاہیئیں۔ انہوں نے پاکستان کے بڑے بڑے شہروں میں اس قسم کی نمائش کے انعقاد کیلئے افغان تاجروں کو اپنی وزارت کی طرف سے ہر ممکن سہولیات فراہم کرنے کی پیشکش بھی کی۔ انہوں نے کہا کہ وسطی ایشیاء اور افغانستان کے تاجروں کی سہولت اور تجارتی مسائل کے حل کیلئے وزارت تجارت میں وسطی ایشیاء کے خطہ اور افغانستان کیلئے علیحدہ ڈیسک قائم کر دیا گیا ہے۔

مزید : صفحہ اول


loading...