2013انتخابات میں مبینہ دھاندلی سے متعلق جوڈیشل کمیشن نے سماعت ایک ہفتے کیلئے ملتوی کردی

2013انتخابات میں مبینہ دھاندلی سے متعلق جوڈیشل کمیشن نے سماعت ایک ہفتے کیلئے ...
2013انتخابات میں مبینہ دھاندلی سے متعلق جوڈیشل کمیشن نے سماعت ایک ہفتے کیلئے ملتوی کردی

  



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)2013کے انتخاب میں مبینہ انتخابی دھاندلی کی تحقیقات کیلئے جوڈیشل کمیشن کا جسٹس ناصر لملک کی سربراہی میں اجلاس ہو ا ،دوران اجلاس جوڈیشل کمیشن نے الیکشن کمیشن سے ایک ہفتے اور نادرا سے تین دن میں 37حلقو ں کی رپورٹ پیش کرنے کا حکم دے دیا۔تفصیلات کے مطابق 21سیاسی جماعتوں کے 47شخصیات نے شواہد اور جوڈیشل کمیشن میں جمع کروا دی ہیں ۔چیف جسٹس ناصرلملک نے سماعت شروع ہونے پر ریمارکس دیے کہ جوڈیشل کمیشن پہلے اپنے قواعد ضوابط اور اصول واضح کریں گے ۔انہوں نے کہا کہ جوڈیشل کمیشن اپنے ٹی او آرز کے دائرہ کار میں رہے گا اور کمیشن صرف رپورٹ مرتب کرے گا فیصلہ حکومت کو کرناہو گا۔

جسٹس ناصر لملک نے کہا کہ ابھی صرف جوڈیشل کمشن سیاسی جماعتوں کی گزارشات کا جائزہ لے گا ،میڈیاکوریج سے یہ تاثر ابھرنا نہیں چاہیے کہ وہ جوڈیشل کمیشن کی کارروائی پر اثر اندادز ہو ،اور سیاسی قائدین کو عدالت کے احاطے میں بیان بازی سے بھی روک دیاگیاہے ۔سپریم کورٹ نے کے کے آغا کو جوڈیشل کمیشن کو معاون مقرر کر دیاہے ۔

چیف جسٹس ناصر لملک نے تمام سیاسی جماعتوں کو دھاندلی کی ثبوت ایک ہفتے میں جمع کروانے کا حکم دے دیتے ہوئے سماعت ایک ہفتے کیلئے ملتوی کر دی۔

مزید : قومی /اہم خبریں


loading...