سعودی عرب کی وجہ سے کینیڈین وزیراعظم بڑی مشکل میں پھنس گئے،سنگین الزام لگ گیا

سعودی عرب کی وجہ سے کینیڈین وزیراعظم بڑی مشکل میں پھنس گئے،سنگین الزام لگ گیا
سعودی عرب کی وجہ سے کینیڈین وزیراعظم بڑی مشکل میں پھنس گئے،سنگین الزام لگ گیا

  

اوٹاوا(مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی عرب کے ساتھ ہتھیاروں کی فروخت کے معاہدے کی وجہ سے کینیڈا کے وزیراعظم جسٹن ٹروڈو بہت بڑی مشکل میں پھنس گئے ہیں۔ ٹروڈو حکومت نے سعودی عرب کے ساتھ 15ارب ڈالر(تقریباً15کھرب روپے) کا معاہدہ کیا تھا۔ اب ٹروڈو حکومت اس الزام کی زد میں ہے کہ اس نے سعودی عرب کو اسلحہ فروخت کرنے کے معاہدے پر کینیڈین عوام کو دھوکے میں رکھا اور اپنی حدود سے تجاوز کیا ہے۔ کینیڈین اخبار ”دی گلوب اینڈ میل“ کی رپورٹ کے مطابق کینیڈا کے وزیرخارجہ سٹیفن ڈیون نے گزشتہ ہفتے سعودی عرب کو اسلحہ اور جنگی گاڑیاں فروخت کرنے کے پرمٹ پر انتہائی رازداری کے ساتھ دستخط کر دیئے۔

’سالگرہ کی خوشی میں کل میزائلوں کی بارش کریں گے‘

کینیڈین سیاسی جماعت این ڈی پی کے رہنماءٹام مولکیئر(Tom Mulcair) کا کہنا تھا کہ ”ٹروڈو حکومت نے عوام کو دھوکا دیا ہے۔ انہوں نے سعودی عرب کے ساتھ ہتھیاروں کا معاہدہ کرتے ہوئے شہریوں کو یہ بھی نہیں بتایا کہ کس شخص نے معاہدے پر دستخط کیے ہیں اور کس چیز کے لئے معاہدہ کیا گیا ہے۔ یہ بہت سنجیدہ معاملہ ہے۔ ٹروڈو حکومت نے عوام کے ساتھ جھوٹ بولا ہے اور اپنے اختیارات سے تجاوز کیا ہے۔“ معاہدے کے دیگر ناقدین کا کہنا ہے کہ سعودی عرب میں انسانی حقوق کے حوالے سے ریکارڈ پہلے ہی اچھا نہیں ہے، لہٰذا اسے اتنی بھاری مقدار میں اسلحہ فروخت کرنا مناسب عمل نہیں ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -