کوئٹہ اور گرد و نواح میں سپورٹس ٹیلنٹ کی کوئی کمی نہیں،حکومت مسائل کو حل کرے،عہدیداران

کوئٹہ اور گرد و نواح میں سپورٹس ٹیلنٹ کی کوئی کمی نہیں،حکومت مسائل کو حل ...

  

لاہور (عامر خان سے) کوئٹہ اور گرد و نواح میں سپورٹس ٹیلنٹ کی کوئی کمی نہیں لیکن ریجن کے تمام اضلاع کو کھیلوں کے حوالے سے خاصے مسائل درپیش ہیں۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرکے باصلاحیت کھلاڑیوں کی حوصلہ افزائی کی جائے۔ ان خیالات کا اظہار کوئٹہ ریجن سے تعلق رکھنے والی مختلف ایسوسی ایشنز کے نمائندوں نے پاکستان فورم میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ پشین کرکٹ ایسوسی ایشن کے صدر محمد اکرم بٹ زئی، سرپرست اعلیٰ لیاقت علی ترین، منور خان، نوشکی کرکٹ ایسوسی ایشن کے صدر ہدایت اللہ جمال قریشی نے کہا کہ کوئٹہ میں بسم اللہ خان، رمیض راجہ جونیئر، شہزاد ترین، عمران خان، میر وائس خان، مجیب اللہ، زبیر احمد، اسرار احمد، محمد الیاس جیسے کرکٹرز موجود ہیں جنہیں موقع دینے سے بلوچستان کی نمائندگی اور احساس محرومی کا ازالہ ہوسکتا ہے۔ فورم میں گفتگو کرتے ہوئے پشین کرکٹ ایسوسی ایشن کے صدر محمد اکرم بئے زئی نے کہا کہ ہمارے پاس بے پناہ ٹیلنٹ موجود ہیں مگر گراؤنڈ اور اکیڈمیز نہ ہونے سے ہمارا ٹیلنٹ ضائع ہو رہا ہے۔ پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین اور چیف آپریٹنگ آفیسر سے خصوصی اپیل کرتے ہییں کہ ضلع پشین میں فوری طور پر گراؤنڈ بنانے کیلئے اقدامات کریں۔ ہمیں انٹر سکولز لیول کرکٹ کیلئے فنڈز فراہم کئے جائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ چیئرمین پی سی بی، ایگزیکٹو کمیٹی کے چیئرمین نجم سیٹھی اور سبحان احمد کا خصوصی شکریہ ادا کرتا ہوں کہ جنرل کونسل اجلاس میں ہماری تجاویز اور مسائل کو غور سے سنتا اور فوری عمل درآمد کی یقین دہانی کروائی۔ نوشکی کرکٹ ایسوسی ایشن کے صدر ہدایت اللہ جمال دینی نے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں نوشکی کرکٹ گراؤنڈ کی فعالیت کیلئے پی سی بی ضروری اشیاء کی فراہمی یقینی بنائیں۔ ۔پشین ایسوسی ایشن کے پیٹرن لیاقت علی ترین نے کہا کہ نیشنل اکیڈمی میں ہمارے باصلاحیت کھلاڑیوں کو تربیت دی جائے اور بلوچستان میں فرسٹ کلاس میچز کروانے کو یقینی بنایا جائے۔ بگٹی اسٹیڈیم میں رمضان کپ کے دوران ہزاروں کی تعداد میں تماشائی گراؤنڈ کا رخ کرتے ہیں، مگر ریجنل ٹورنامنٹ، فرسٹ کلاس میچز نہ ہونے سے ہمارے کھلاڑیوں کو اپنی صلاحیتیں دکھانے کا موقع نہیں ملتا۔جب تک سابقہ فرسٹ کلاس کرکٹر نسیم خان کو جونیئر سلیکشن کمیٹی کا ممبر نہیں بنایا جاتا، بلوچستان کے کھلاڑیوں کو مشکلات درپیش ہونگے۔ نسیم خان ایک سابقہ ایسا کھلاڑی ہے جو بلوچستان ٹیلنٹ کو تلاش نکھار سکتا ہے۔ لہٰذا پی سی بی سے درخواست ہے کہ نسیم خان کو جونیئر سلیکشن کمیٹی کا ممبر بنا کر تاکہ بلوچستان کی بہتر انداز سے نمائندگی اور خدمت ہوسکیں۔

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -