آئی سی یو وارڈوں کے اے سی خراب ،مریض گرمی سے نڈھال

آئی سی یو وارڈوں کے اے سی خراب ،مریض گرمی سے نڈھال

لاہور(جاوید اقبال)ہسپتالوں میں مریضوں کی آخری علاجگاہ کہلانے والے آئی سی یوز (انتہائی نگہداشت وارڈز)کے ایئر کنڈیشنز سسٹم خراب ہو گئے ہیں ۔جس سے زیر علاج مریض فرائض سرانجام دینے والے ڈاکٹرز ،نرسیں اور پیرا میڈیکل سٹاف پسینے سے 24 گھنٹے شرابور رہتے ہیں دوسری طرف نازک حال مریض شدید گرمی اور حبس سے نڈھال ہیں اور ایک ہی حالت میں بیڈز پر لیٹے ہوئے مریض شدید گرمی اور پسینہ بہنے کے باعث جلدی امراض سے دوچارہو گئے ہیں ۔تفصیلات کے مطابق صوبائی دارالحکومت کے ٹیچنگ اور ضلعی ہسپتالوں میں پانچ سال قبل اربوں روپے کی لاگت سے ایئر کنڈیشنز سسٹم لگوائے گئے، غیر معیاری اور ناقص سسٹم ان وارڈوں میں کام کرنا چھوڑ گیا ہے ۔بتایا گیا ہے کہ سروسز ہسپتال لاہور کے آئی سی یو اور سی سی یو میں دیو ہیکل طرز کے اے سی لگائے گئے مگر یہ تمام کے تمام خراب ہیں۔گزشتہ سال خراب ایئر کنڈیشنر سسٹم کو ٹھیک کرنے کے نام پر فائلوں میں من پسند کمپنیوں کو ایڈوانس میں لاکھوں روپے ادا کر دیئے بعد ازاں یہ سکینڈل سامنے آ گیاجس کی محکمہ صحت نے تحقیقات کیں جس میں ثابت ہو گیا کہ اے سی ٹھیک نہیں کروائے گئے مگر اس کی انکوائری رپورٹس فائلوں میں دفن کروا دیں اسی طرح جناح ،گنگا رام ،میاں منشی ،کوٹ خواجہ سعید ، جنرل ،لیڈی ولنگٹن سمیت بعض ہسپتالوں میں 60فیصد اور بعض میں 80 فیصد ایئر کنڈیشنز کام نہیں کر رہے۔اس حوالے سے مشیر صحت خواجہ سلیمان رفیق کا کہنا ہے کہ جن ہسپتالوں میں ایئر کنڈیشن خراب ہیں انہیں فوری طور پر درست کروانے کے لیے احکامات جاری کیے جائیں گے اور جن ہسپتالوں کی انتظامیہ نے نا اہلی برتی ان کے خلاف بھرپور کارروائی کی جائے گی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1