چیف جسٹس کے علاوہ کوئی کمیٹی یا کمیشن قبول نہیں ،پرانا دو ر ہوتا تو پانامہ لیکس کا معاملہ چھپ جانا تھا :عمران خان

چیف جسٹس کے علاوہ کوئی کمیٹی یا کمیشن قبول نہیں ،پرانا دو ر ہوتا تو پانامہ ...
چیف جسٹس کے علاوہ کوئی کمیٹی یا کمیشن قبول نہیں ،پرانا دو ر ہوتا تو پانامہ لیکس کا معاملہ چھپ جانا تھا :عمران خان

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک)پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہاہے کہ پہلی دفعہ آزاد کشمیر میں شفاف الیکشن ہو گا ،آزاد کشمیر کے الیکشن میں سٹیٹس کو کے حامیوں کو شکست دیں گے ،پرانا دور ہوتا تو پاناماپیپرز کا معاملہ چھپ جانا تھا ،چیف جسٹس کے علاوہ کوئی کمیشن یا کمیٹی قبول نہیں ہے ۔

فنڈ ریزنگ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان کا کہناتھا کہ باریاں لینے والوں کو عوام سمجھ چکی ہے ،یہ پاکستان بدل چکاہے جس کی ایک وجہ پاکستانی ٹی وی چینلز ہیں جنہوں نے لوگوں میں شعور پیدا کیاہے اور اصل میں نوجوانوں میں جو تبدیلی آئی ہے وہ سوشل میڈیا کی وجہ سے آئی ہے کیونکہ اب کوئی بھی چیز چھپائی نہیں جاسکتی ہے ،سوشل میڈیا پر فوری کوئی بھی چیز وائرل ہو جاتی ہے اور ہر کوئی اسے دیکھ سکتاہے ۔عمران خان کا کہناتھا کہ اگر پرانا دور ہوتا تو پاناما پیپرز نے چھپ جانا تھا لیکن اب نہیں چھپ سکتا ، پہلے میڈیا پر کنٹرول تھا لیکن اب نہیں ہے ۔

عمران خان کا کہناتھا کہ شریف خاندان کو اثاثے ظاہر کرنے ہوں گے کیونکہ حکومت عوام کو جوابدہ ہوتی ہے ، ٹیکس کے بغیر ملک نہیں چل سکتا ،دیکھیں پار ک لین کے محل  اور انہوں نے ٹیکس کتنا دیاہے ،ڈیوڈ کیمرون اور پاکستانی وزیراعظم کو یکھیں کہ کیسے رہتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ عوام نے مطالبہ کیا تو ڈیوڈ کیمرون نے اپنے ٹیکس گوشوارے شائع کیے ،عوام کو جو اب دیا لیکن حکومت پر کرپشن کا الزام لگا تو جواب دینے کی بجائے انہوں نے خورشید شاہ پر الزام لگا دیا،میرے خلاف کچھ نہیں ملا تو انہوں نے مفاد کیلئے شوکت خانم کو نشانہ بنایا ۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم خود ٹیکس نہ دے تو وہ عوام سے کیسے مانگے گا ؟نوازشریف نے ایک مرتبہ بھی وضاحت نہیں دی ،درباری پاناما لیکس پر روزانہ گفتگو کرنے آ جاتے ہیں ۔

چیئرمین پی ٹی آئی کا کہناتھا کہ بڑے بڑے لوگوں کے ٹیکس ریٹر ن دیکھ لیں ،جب میں کاﺅنٹی کھیلتا تھا تو 35فیصد ٹیکس دیتاتھا ،18سال کرکٹ کھیلی اور سارا پیسہ میرے نام پر میرے ملک میں ہے۔انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت آئی تو کسی کو بلیک میل نہیں کریں گے بلکہ مجرموں کو پکڑے گے ،جمہوریت میں شفافیت ہونی چاہیے ،ملک میں ڈھائی کروڑ بچے سکول سے باہر ہیں ۔خطاب کے آخر میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان کا کہناتھا کہ انہیں چیف جسٹس کے علاوہ کوئی کمیٹی یا کمیشن قبول نہیں ہے ۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -