’’الضرار‘‘کمانڈوز کچے میں داخل ،کرفیو نافذ،گن شپ ہیلی کاپٹر وں سے فائرنگ جاری،40ڈاکوؤں نے ہتھیار ڈال دیئے

’’الضرار‘‘کمانڈوز کچے میں داخل ،کرفیو نافذ،گن شپ ہیلی کاپٹر وں سے فائرنگ ...

  

روجھان ، راجن پو،‘ مٹھن کوٹ ، بہاولنگر ، صادق آباد ، سیت پور ،جام پور،چوٹی زیریں ( نمائندگان ،اے این این ) روجھان کے علاقے کچے میں پولیس کی ناکامی کے بعد جرائم پیشہ گروپ چھوٹو گینگ کے خلاف آپریشن ضرب آہن کی کمانڈ پاک آرمی نے سنبھال لی آرمی کے450 جوانوں نے روجھا ن کے علاقے کچے کو گھیرے میں لے کر مورچے سنبھال لیے ہیں ۔پاک فوج کے جوان 6کلومیٹر اندر کچی جمال میں پہنچ گئے ہیں جنہیں آرمی کے دس گن شپ ہیلی کاپٹروں کی مدد حاصل ہے ۔اسکے علاوہ پاک آرمی کے290 ایس ایس جی کمانڈو بھی برگیڈیرمبین کی نگرانی روجھان کے علاقے کچے میں پہنچ گئے ہیں اس یونٹ کانام 4کمانڈر یونٹ ہے جیسے ’’الضرار ‘‘بھی کہتے ہیں شام پایچ بجے آرمی نے کچے میں آپریشن شروع کیا آپریشن سے قبل پاک آرمی نے شام چھ بجے سے صبح چھ بجے تک روجھان کے علاقے کچے میں کرفیونافذ کردیا پاک آرمی کو دیکھ کر 40 ڈاکووں نے ہتھیار ڈال دیئے اسکے علاوہ پاک آرمی نے گن شپ ہیلی کاپٹر کے ذریعے فائرنگ کی جس سے جرائم پیشہ گروپ چھوٹو گینگ کے ٹھکانے تباہ کردیئے ۔میڈیارپورٹ کے مطابق پولیس کے یرغمال اہلکاروں کو نکالنے کی کوششیں جاری ہیں اور پورے علاقے کو سیل کر دیا گیا۔ کچے کے علاقوں میں جمعہ کی شام 6 سے(آج)ہفتہ کی صبح 6 بجے تک کرفیو نافذ رہے گا۔ ادھر یرغمال کچے کے علاقے میں ڈاکوؤں کے ہاتھ یرغمالیوں کے اہل خانہ غم سے نڈھال ہیں اور لواحقین نے اپنے پیاروں کی بازیابی کے لیے احتجاج بھی کیا جس کے باعث انڈس ہائی وے پر گاڑیوں کی میلوں لمبی قطاریں لگ گئیں۔ دوسری طرف ہتھیار ڈالنے والے چھوٹو گینگ کے افراد کا کہنا تھا کہ وہ پاک فوج سے لڑنا نہیں چاہتے ۔

لاہور(جنرل رپورٹر) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ راجن پور کے علاقے کچے میں ڈاکوؤں اور جرائم پیشہ عناصر کے خلاف آپریشن کے دوران شہید ہونے والے پولیس اہلکاروں کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی اور راجن پور کے کچے کے علاقہ میں ڈاکوؤں کے خلاف پولیس فورس نے جس بہادری اور جوانمردی کا مظاہرہ کیا ہے وہ قابل تعریف ہے او رحکومت انشاء اللہ علاقے سے جرائم پیشہ عناصر کا مکمل صفایا کر کے دم لے گی۔ وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے شہداء پیکیج کے تحت آپریشن کے دوران شہید ہونے والے پولیس کانسٹیبلان کے لواحقین کیلئے فی کس 50 لاکھ روپے مالی امداد،گھر کیلئے 25 لاکھ روپے، شہداء کے لواحقین میں سے ایک فرد کیلئے ملازمت ، مفت علاج معالجہ و تعلیم کی فراہمی اورشہید اہلکاروں کی مدت ملازمت مکمل ہونے تک لواحقین کیلئے پوری تنخواہ کا اعلان کیا۔امن و امان کے حوالے سے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف نے کہا کہ راجن پور میں پولیس اہلکاروں نے ڈاکوؤں کے خلاف اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرکے جرأت اور بہادری کا مظاہرہ کیا ہے اور ایک مرتبہ پھر یہ ثابت کر دکھایا ہے کہ پولیس عوام کے جان و مال کے تحفظ کیلئے پوری طرح مستعد ہے۔ وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ آپریشن کے دوران زخمی ہونیوالے اہلکاروں کو علاج معالجے کی ہر ممکن بہترین سہولتیں فراہم کی جائیں۔ اجلاس میںآپریشن کے دوران شہید ہونیوالے پولیس اہلکاروں کے درجات کی بلندی کیلئے فاتحہ خوانی اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کیلئے دعا کی گئی۔

مزید :

صفحہ اول -