پنجاب اسمبلی ،’’چھوٹو گینگ‘‘پر بحث کے دوران اجلاس ملتوی ،اپوزیشن سراپا احتجاج

پنجاب اسمبلی ،’’چھوٹو گینگ‘‘پر بحث کے دوران اجلاس ملتوی ،اپوزیشن سراپا ...

  

لاہور(نمائندہ خصوصی) پنجاب اسمبلی کا اجلاس راجن پور کے چھوٹو گینگ پر بحث کے دوران غیر معینہ مدت تک کے ملتوی کردیا گیا ہے اس موقع پر اپوزیشن کی جانب سے ایوان میں ’’ڈپٹی سپیکر ہائے ہائے ‘‘کے نعرے لگائے گئے ڈپٹی سپیکر نے اپوزیشن کو چھوٹو گینگ پر تحریک التواء پر بحث کی اجازت دے دی لیکن اجلاس کا وقت ختم ہونے پربحث کے دوران ہی سپیکر نے اجلاس ملتوی کردیا جس پراپوزیشن ارکان نے ڈپٹی سپیکر کے خلاف نعرے بازی شروع کردی ، اور کہا کہ ’’ چھوٹو گینگ کے سرپرست ڈپٹی سپیکر ہائے ہائے‘‘اجلاس ملتوی کرنے پر اپوزیشن لیڈرمیاں محمود الرشید نے کہا کہ ہم ڈپٹی سپیکر کے رویے کی مذمت کرتے ہیں اگر وہ چاہتے تو ایوان کا وقت بڑھا سکتے تھے، کچے کے علاقے میں چھوٹو گینگ کے خلاف آپریشن کے دوران شہید ہونے والے پولیس اہلکار انہی لوگوں کی وجہ سے مرے ہیں ۔قبل ازیں زراعت کے صوبائی وزیر ڈاکٹر فرخ جاوید نے کہا کہ پنجاب حکومت نے آئندہ سال چاول خریدنے کا فیصلہ کیا ہے اس سلسلہ میں مڈل ایسٹ ،ایران اور دیگر ممالک کے ساتھ چاول کی خریداری کے حوالے سے معاملات آگے بڑھے ہیں ،مڈل مین کی موجودگی کسان کا استحصال کرتی ہے اس کے کرردار کو ختم کرنا اتنا آسان نہیں ہے،رولز میں تبدیلی کے ذریعے کوشش کی جا رہی ہے کہ کسان اپنی پروڈکٹ ڈائریکٹ کنزیومر کو فروخت کرے ان خیالات کا اظہار انہوں نے وقفہ سوالات کے ددوران رکن اسمبلی امجد علی جاوید کے سوال کا جواب دیتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں محکمہ بیت الما ل کی سالانہ رپورٹ پر بحث کا آ غاز کرتے ہوئے پارلیمانی سیکرٹری برائے بیت المال محمد الیاس انصاری نے کہا کہ پنجاب حکومت نے نادار معذور اور مستحق طلباء کے لئے 10کوڑ کے فنڈز مختص کئے تھے اور17کروڑ سے زائد تقسیم کئے، بیت المال کا فنڈز کی تقسیم اس طرح ہے کہ مختص فنڈز میں معذور افراد کے لئے کوٹہ20فیصدمستحق طلباء کے لئے25فیصد،غریب بچیوں کی شادی بیا کے لئے25فیصد مریضوں کے لئے12فیصد فنڈز دئے جاتے ہیں پنجاب حکومت کی یہ کوشش ہے کہ بیت المال کے فنڈز میں اضافہ ہو اس سلسلہ میں کوششیں جاری ہیں۔اپوزیشن لیڈر میاں محمو د الرشید نے کہا کہ بیت المال کی کمیٹیاں تحصیل لیول کی بجائیے یونین کونسل لیول پر بنائی جائیں اس سسٹم کو سیاست سے بالاتر رکھا جائے اور فنڈز میں اضافہ کیا جائے بحث میں میاں محمد رفیق اور امجد علی جاوید نے بھی حصہ لیا۔

مزید :

صفحہ اول -