واپڈا ہائیڈرو یونین کی رجسٹریشن منسوخی کیخلاف اپیل قومی صنعتی تعلقات کمیشن سے خارج

واپڈا ہائیڈرو یونین کی رجسٹریشن منسوخی کیخلاف اپیل قومی صنعتی تعلقات کمیشن ...

  

ملتان + کبیر والا + بارہ میل ( وقائع نگار + نامہ نگار + نمائندہ پاکستان) قومی صنعتی تعلقات کمیشن نے رجسٹریشن منسوخی کے خلاف ہائیڈرو ورکرز یونین کی اپیل خارج کر دی ہے اپیل کے اخراج کے بعد ہائیڈرو ورکرز یونین کی سی بی اے ( احتجاجی سودا کاری ایجنٹ) کی حیثیت ختم ہو گئی ہے واپڈا پیغام یونین کی درخواست پر این آئی آر سی نے فروری 2016 میں ہائیڈرو ورکرز یونین کی بطور سی بی اے رجسٹریشن منسوخ کر دی(بقیہ نمبر35صفحہ12پر )

تھی۔ ہائیڈرو ورکرز یونین نے فیصلے کے خلاف این آئی آر سی کے ڈویژن بنچ سے رجوع کیا تھا جسے گزشتہ روز عدالت نے مسترد کر تے ہوئے خارج کر دیا اور سی بی اے شپ بھی ختم کر دی ہے یہ پیغام یونین کے مرکزی رہنما خواجہ ظہور احمد بٹ نے ہنگامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ واپڈا پیغام یونین ہائیڈرو ورکرز یونین کے خلاف قانونی جنگ جیت گئی ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں 12 فروری 2016 کے احکامات کے تحت نہ صرف ملازمین کی تنخواہوں سے نہ صرف چندہ کٹوتی بند کی جائے۔ بلکہ سی بی اے شپ ختم ہونے سے اب تک کٹوتی ، وصولی کی رقم بھی واپس لی جائیں ، یونین رہنما نے کہا ہے کہ ہائیڈرو یونین کا میپکو انتظامیہ کے خلاف احتجاج کا اعلان چور مچائے شور کے مترادف ہے جس میں ایک مخصوص ٹولہ اپنے کالے کرتوت چھپانے کیلئے میپکو انتظامیہ کو احتجاج کی صورت میں بلیک میل کرنے کی سازش کر رہا ہے موجودہ انتظامیہ بالخصوص چیف ایگزیکٹو ڈائریکٹر ایچ آر اور ڈائریکٹر لیگل اینڈ لیبر کے دور میں میپکو نمبر ون کمپنی بن چکی ہے پیغام یونین میپکو انتظامیہ کے خلاف ہونیوالی سازش کا ڈٹ کر مقابلہ کرے گی۔ ہائیڈرو ورکرز یونین کے مرکزی جنرل سیکرٹری خورشید احمد خان نے کہا ہے کہ قومی صنعتی تعلقات کمیشن اور پیر کورٹ کے فیصلوں کے خلاف لاہور ہائی کورٹ میں نظر ثانی کی درخواست دائر کرینگے ، واپڈا وفاقی ادارہ ہے کوشش ہے کہ ریفرنڈم کمپنیوں کی بجائے ملکی سطح پر ہوتا تاہم کمپنی کی سطح پر ریفرنڈم ہونے کی صورت میں بھی نتائج ماضی کے 5 ریفرنڈم کے لیے تیار ہے اور چور دروازے سے سی بی اے یونین بننے کی خواہشات دل میں ہی رہ جائیں گی۔ کبیروالا+بارہ میل(نامہ نگار+نمائندہ پاکستان ) ا ن خیالات کا اظہارآل پاکستان واپڈا ہائیڈروالیکڑک ورکرز یونین (سی بی اے ) کے مرکزی سیکرٹری جنرل بابا خورشید احمد خان موضع کرم پور جوتہ کبیروالا میں گزشتہ دنوں دوران ڈیوٹی کرنٹ لگنے سے جان بحق ہونیوالا لائن مین مہر خالدمحمود جوتہ کے ورثاء کو یونین کی جانب 25لاکھ روپے مالیت کا چیک دینے کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ آل پاکستان واپڈا ہائیڈروالیکڑک ورکرز یونین (سی بی اے ) کے مرکزی سیکرٹری جنرل خورشید احمد خان نے واپڈا کی جانب سے یونین کی کاوشوں کے نتیجے میں ملنے والا 25لاکھ روپے کا چیک ان کے بڑے بیٹے سمیع الرحمن جوتہ اور دیگر لواحقین کو دیا اور مرحوم کی جگہ انکے ایک بیٹے کو واپڈا میں ملازمت دینے کا بھی اعلان کیا ۔چیک دینے کے موقع پر ایس ای خانیوال محمد نواز گجر ،یونین کے ریجنل چیئرمین چوہدری غلام رسول گجر ،زونل چیئرمین ملتان سرکل چوہدری خالد محمود ،زونل چیئرمین خانیوال سرکل چوہدری محمد ظفر ،ڈویژنل چیئرمین کبیروالا چوہدری محمد نواز سہو ،جنرل سیکرٹری عبدالحق شاہ ،وائس چیئرمین حاجی نذیراحمد اعوان،جوائنٹ سیکرٹری عبیداللہ شکوری ،جنرل سیکرٹری سب ڈویژن مخدوم پور چوہدری اقبال سکھیرا،چیئرمین سب ڈویژن سردار پور چوہدری مشتاق سہو ،غلام عباس نوناری ،ایس ڈی او مہر محمد اسلم مرالی ،ایس ڈی او طلحہ محمود ،ایل ایس چوہدری شفقت علی ،رانا راشد سرور ،پیر آصف شاہ ،عرفان محمود ،سید ذوالقرنین شاہ،سجاد بلوچ،شکیل بلوچ ،ذوالفقار چدھرڑ ،مہر اشفاق ہراج ،محمد امجد ،محمد سلیمان ،حاجی راؤ محمد انور اور بھی موجود تھے ۔قبل ازیں میپکو سردار پور آفس میں مہر خالد محمود جوتہ کی روح کے ایصال وثواب کے لئے قرآن خوانی کی گئی ۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -