سکول ہیڈ ماسٹرنے بچے کی پسلیاں توڑ دیں ٗ کسی پر تشدد نہیں کیا ٗ عبدالتواب

سکول ہیڈ ماسٹرنے بچے کی پسلیاں توڑ دیں ٗ کسی پر تشدد نہیں کیا ٗ عبدالتواب

باگڑ سر گا نہ (نمائندہ پاکستان) ہائی سکول باقر پور چھٹی کلاس کے 2 بچوں میں لڑائی ٗہیڈ ماسٹر نے چھڑانے کی بجائے ایک بچے کی پسلیاں (بقیہ نمبر23صفحہ12پر )

توڑ دیں ناصر شاہ کا موقف تفصیل کے مطابق ناصر شاہ نے بتایا کہ گزشتہ روز چھٹی کلاس کے طالب علموں میں ٹیچر نہ ہونے کی وجہ کلاس روم میں لڑائی ہوئی اس لڑائی میں ایک بچے کو شدید چوٹیں بھی آئیں بچے کے گھر والوں کو سکول سٹاف نے مطمئن کیا کہ بچے آپس میں لڑے جبکہ اہل علاقہ نے نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر بتایا کہ اصل میں بچے کی پسلیاں ہیڈ ماسٹر کے تشدد سے ٹوٹی ہیں کیونکہ جب کلاس روم میں ٹیچر نہیں تھا تو اس وقت ہیڈ ماسٹر وہاں پہنچے جنہوں نے بچوں کی لڑائی ختم کروانے کی بجاے ان پر تشدد کیا جس کے نتیجے میں ایک بچے کی 2 پسلیاں ٹوٹ گئیں اور جب بچہ بے ہوش ہو گیا تو اس کے گھر والے اپنی مدد آپ کے تحت بچے کو سکول سے لے گئے اور اس کی مرہم پٹی کروائی ، اہل علاقہ نے ڈی سی او خانیوال سے مطالبہ کیا ہے کہ ہیڈ کے خلاف انکوائری کروا کر کاروائی کی جائے۔ جب ہیڈ ماسٹر عبدالتواب سے موقف جاننے کے لیے اس نمبر 03477263033 پر رابطہ کیا تو انہوں نے کہا کہ میں نے کسی بچے پر تشدد نہیں کیا بلکہ بچے گراونڈ میں کھیل رہے تھے کہ ایک بچے نے شرارت کرتے ہوئے آگے اپنا پاؤں کر دیاجس کی وجہسے بچہ نیچے پڑی اینٹ پر گرگیا اور اُسے چوٹ لگ گئی میں نے بلکہ بچے کے علاج کیلئے پیسے دیئے میرے تشددکرنے کی خبربے بنیاد ہے

ہیڈ ماسٹر

مزید : ملتان صفحہ آخر