سعودی عرب میں اب کمپنیاں لوگوں کو ملازمت پر کس طرح رکھا کریں گی؟ ایسا فیصلہ جسے جان کر غیر ملکیوں کے پیروں تلے زمین نکل جائے گی

سعودی عرب میں اب کمپنیاں لوگوں کو ملازمت پر کس طرح رکھا کریں گی؟ ایسا فیصلہ ...
سعودی عرب میں اب کمپنیاں لوگوں کو ملازمت پر کس طرح رکھا کریں گی؟ ایسا فیصلہ جسے جان کر غیر ملکیوں کے پیروں تلے زمین نکل جائے گی

  

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی عرب میں غیر ملکی ملازمین کی تعداد کم کرنے اور سعودی شہریوں کو روزگار کے زیادہ سے زیادہ مواقع فراہم کرنے کے ملازمین کی بھرتی کے نظام میں بڑی تبدیلیاں متعارف کروائی جا رہی ہیں۔ سعودی وزارت محنت نے اس سلسلے میں ایک اہم قدم اٹھاتے ہوئے ویزوں کی فروخت کے ذریعے غیر ملکی ملازمین کی بھرتی بند کرنے پر کام شروع کردیا ہے۔

عرب نیوز کے مطابق بھرتی کا نیا نظام وضع کیا جائے گاجس کے تحت خالی اسامیوں کی ای امپلائمنٹ پورٹل (e-employment portal) پر تشہیر کی جائے گی۔ یہ ایک کمپوٹرائزڈ نظام ہو گا جس کے زریعے کمپنیاں اور ادرے ملازمین کی بھرتی کریں گے، اور اس کی بدولت سعودی شہریوں کو ترجیحی بنیادوں پر ملازمت ملے گی۔

کویت میں تارکین وطن کیلئے پانی اور بجلی کے چارجز بڑھانے کا بل منظور ،کویتی شہری مستثنیٰ قرار

اس نظام کے زریعے یہ یقنی بنایا جائے گا کہ کسی بھی اسامی کے لئے پہلے سعودی شہریوں کی تلاش کی جائے اور اگر کسی اسامی کے لئے سعودی شہری دستیاب نہ ہو سکیں تو اس صورت میں مملکت کے اندر موجود غیر ملکیوں کو ٹرانسفر آف سروسز کے تحت ملازمت دی جائے۔ مملکت سے باہر موجود غیر ملکیوں کو صرف اس صورت میں ملازمت دی جائے گی کہ جب مملکت کے اندر نہ کوئی سعودی شہری اور نہ ہی کوئی غیر ملکی ملازمت کے لئے دستیاب ہو۔

حکام کا کہنا ہے کہ اس نظام سے ناصرف غیر ملکیوں کی بھرتی میں کمی آئے گی بلکہ ویزوں کی تجارت کا سلسلہ بھی ختم ہوجائے گا، اور کمپنیوں کو بہتر معیار کے ملازمین بھی دستیاب ہوسکیں گے۔

مزید : عرب دنیا