ختنوں کے مَردوں کی جنسی زندگی پر کیا اثرات مرتب ہوتے ہیں؟ سائنسدانوں نے تاریخ ساز تحقیق میں فیصلہ سنادیا

ختنوں کے مَردوں کی جنسی زندگی پر کیا اثرات مرتب ہوتے ہیں؟ سائنسدانوں نے ...
ختنوں کے مَردوں کی جنسی زندگی پر کیا اثرات مرتب ہوتے ہیں؟ سائنسدانوں نے تاریخ ساز تحقیق میں فیصلہ سنادیا

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) مردوں کے ختنے طویل عرصے سے طبی سائنس کا متنازع موضوع چلا آ رہا ہے اور اس کے حق اور مخالفت میں اکثر دلائل پیش کیے جاتے رہتے ہیں۔ مغرب میں ختنوں کے حوالے سے یہ تاثر عام پایا جاتا ہے کہ ”ختنے کروانے جنسی حساسیت کم ہو جاتی ہے۔“ مگر اب سائنسدانوں نے اپنی نئی تحقیق میں اس عام تاثر کو غلط ثابت کر دیا ہے۔ برطانوی اخبار دی انڈیپنڈنٹ کی رپورٹ کے مطابق کینیڈا کے صوبے اونٹیریو(Ontario)کی کوئنز یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے اپنی اس تحقیق میں 62مردوں کی جنسی حساسیت کے ٹیسٹ کیے۔ ان مردوں میں کی عمریں 18سے 37سال کے درمیان تھیں اور ان میں سے 30ایسے مرد تھے جن کے ختنے ہو چکے تھے جبکہ 32کے نہیں ہوئے تھے۔

شرمناک خواہش پوری نہ کرنے پر 7 بیویوں کے شوہر کا اپنی بیگمات پر خوفناک تشدد

رپورٹ کے مطابق سائنسدانوں نے ان مردوں میں جنسی صلاحیت، جنسی خواہش اور تسکین کے بھی ٹیسٹ کیے اور اپنی رپورٹ میں بتایا کہ ان دونوں گروپوں کے مردوں میں اس حوالے سے کوئی فرق سامنے نہیں آیا۔ تحقیقاتی ٹیم کی سربراہ جینیفر بوسیو کا کہنا تھا کہ ”ہم نے 4ہفتے تک ان مردوں کے براہ راست ٹیسٹ کیے اور دونوں گروپوں کے مردوں کی جنسی حساسیت میں فرق معلوم کرنے کی کوشش کی۔ مگر ہم اس نتیجے پر پہنچے ہیں کہ بچپن میں ہی جن مردوں کے ختنے کر دیئے جاتے ہیں ان کی جنسی حساسیت میں کوئی فرق نہیں آتا۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ ختنوں میں کاٹی جانے والی جلد اتنی حساس نہیں ہوتی، چنانچہ ختنے ہونے یا نہ ہونے سے اس پر فرق نہیں پڑتا۔

واضح رہے کہ ختنوں کو اس سے پہلے کئی تحقیقات میں عمومی انفیکشن اور جنسی بیماریوں سے بچاﺅ کا بہترین طریقہ بھی قرار دیا جا چکا ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -