دشمن امت مسلمہ کو علماء سے لڑانے کی کوشش کررہے ہیں:مسجد الحرام کے امام و خطیب

دشمن امت مسلمہ کو علماء سے لڑانے کی کوشش کررہے ہیں:مسجد الحرام کے امام و خطیب
دشمن امت مسلمہ کو علماء سے لڑانے کی کوشش کررہے ہیں:مسجد الحرام کے امام و خطیب

  

جدہ (محمد اکرم اسد/ بیورو چیف) مسجد الحرام کے امام و خطیب شیخ ڈاکٹر صالح بن حمید نے واضح کیا ہے کہ داخلی اور خارجی دشمن امت مسلمہ کو علماء سے لڑانے کے لئے کوشاں ہیں۔ وہ حرم شریف کے اعیامن افروز روحانی ماحول میں جمعہ کا فکر انگیز خطبہ دے رہے تھے۔ امام حرم نے کہا کہ محض نماز، روزوں کی کثریت کو عبادت قرار دینا درست نہیں ہے۔ عبادت اللہ تعالیٰ کے احکام کی تعمیر اور ممنوعہ امور سے پرہیز کر نام ہے۔ امام حرم نے کہا کہ آمائشیں دلوں کے اندر پوشیدہ احوال کو سامنے لے آتی ہیں۔ مومن حق کے اسیر ہوتے ہیں۔ مسلم مشاہیر صراطِ مستقیم پر ہر حال میں قائم رہتے ہیں۔ بحرانوں میں ا ن کے قدم متزلزل نہیں ہوتے۔ یہ لوگ آزمائشوں کو فراست سے دیکھتے ہیں اور ان پر صبر کرتے ہیں۔ امام حرم نے کہا کہ اسلامی شریعت کے علمبردار علماء کی طاقت وقت کے ساتھ ساتھ اللہ اور اس کے رسول ﷺ کی اطاعت میں مضمر ہے۔ امام حرم نے کہا کہ علم انبیاء اکرام علیہم السلام کا ترکہ ہے۔ پہلے صحابہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے کے علمی ترکے کے وارث بنے پھر تابعین اور تبع تابعین کے حصے میں یہ نعمت آئی۔ قیامت تک نبویت کا یہ ترکہ نسل در نسل آنے والے علماء کے نصیب میں آتا ہے۔ امام حرم نے توجہ دلائی کہ فرزندان اسلام اہل علم سے محبت کریں۔ اہل علم کا سب سے بڑا حق یہی ہے کہ ان کے خلاف زبانی طعن و تشبیح سے گریز کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ غیرت، حسد، نفس پرستی، تعصب، گروہ بندی اور خود کو اونچا سمجھنے والا احساس علماء کے حوالے سے بدگمانی کا باعث بنتا ہے۔ داخلہ و خارجی دشمن علماء اور امت کے درمیان دراڑ پیدا کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ جو لوگ علماء کی پگڑی اچھالتے ہیں وہ گمراہ ہیں۔ امام حرم نے کہا کہ علماء کے کردار کو کمزور کرنے کے سنگین نتائج برآمد ہوں گے۔ امت کا حال و مستقبل متاثر ہوگا۔ علماء کو کمزور کرنے سے معاشرہ کمزور ہوگا۔ علماء معصوم ہیں۔ پیغمبروں اور انبیاء کے سوا کوئی معصوم نہین۔ اگر کوئی عالم غلطی کرتا ہے تو اس کی گرفت اہل علم کا حق ہے۔ علماء کوئی ایسی بات یا کام نہ کریں جسے بنیاد بنا کر لوگ ان کی پگڑی اچھالیں۔ دوسری جانب مدینہ منورہ میں مسجد نبوی شریفؐ کے امام شیخ صالح البدیر نے وارثوں کا ترکہ ہڑپ کرجانے پر سخت وعید سنائی۔ انہوں نے کاہ کہ کوئی بھی انسان یہ نہ بھولے کہ دنیا جلد ختم ہونے والی ہے۔ وہ لوگ بہت بڑے ہیں جو حرص کے چکر میں چوری کرتے ہیں۔ انہوں نے توجہ دلائی کہ جو لوگ ترکے کی تقسیم میں بعض وارثوں کو محروم کرتے ہیں۔ وہ حکم ربی کا پامال کرتے ہیں۔ یاد رکھیں ترکے کی جائز تقسیم اللہ تعالیٰ کی مقرر کردہ وہ شرعی حد ہے جس سے تجاویز کرنے کی ہرگز اجازت نہیں ہے۔ امام مسجد نبویؐ نے کہا کہ جو لوگ ترکے کی تقسیم میں حق تلفی کرتے ہیں، خواتین اور یتیموں کا حق مارتے ہیں یا یتیموں کے ترکے یا ورثے پر ہاتھ صاف کردیتے ہیں۔ انہیں دنیا و آخرت میں رسوائی کا سامنا کرنا پڑے گا۔

مزید : عرب دنیا