انتظامیہ اراضی ریکارڈ سنٹر وں کیلئے ایس او پی پر عملدرآمد کروانے میں ناکام

انتظامیہ اراضی ریکارڈ سنٹر وں کیلئے ایس او پی پر عملدرآمد کروانے میں ناکام

لاہور(عامر بٹ سے )پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی کی انتظامیہ صوبے بھر میں قائم اراضی ریکار ڈ سنٹر کیلئے بنائے جانے والے (ایس او پی) پر عملدرآمد کروانے میں ناکام ہوگئی، نام تبدیلی اور نام درستگی کی بابت اسسٹنٹ ڈائریکٹر لینڈ ریکارڈ نے اپنی مرضی کے مطابق قوانین نافذ کرلیے، عوم کیلئے دربدر کی ٹھوکریں،ذلالت اورخواری کا راستہ متعارف کروادیا گیا۔ مزید معلوم ہوا ہے کہ پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی کی انتظامیہ کی جانب سے مانیٹرنگ کے غیر فعال سسٹم کے سبب صوبے بھر میں قائم اراضی ریکارڈ سنٹر میں اسسٹنٹ ڈائریکٹر لینڈ ریکارڈ کی من مانیاں عروج پرپہنچ گئیں اور پی ایل آر کی جانب سے مرتب کیے جانے والے (ایس او پی) پر عملدرآمد کرنے کی بجائے اپنی سوچ ا ور مرضی کے مطابق قوانین متعارف کروائے جانے لگے۔ ذرائع نے بتایا کہ نام تبدیلی اور نام درستگی کی بابت بعض اے ڈی ایل آر کورٹ سے ڈگری لانے تو بھی ڈپٹی کمشنر کی اجازت لانے کا راستہ دکھائے رہے ہیں تو بیشتر اے ڈی ایل آر بیان حلفی، نمبردارخ جنرل کونسلر کا تصدیق شدہ اشٹام پیپر لیکر بھی سائلین کا کام کررہے ہیں ایک ہی کام کیلئے الگ الگ قانون ضابطہ نافذ ہونے پر عوام الناس کی کثیر تعداد کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔ عوام الناس نے ڈی جی پی ایل آر سے نوٹس لینے کا مطالبہ کردیا ہے۔ دوسری جانب ترجمان پی ایل آر اے کا کہنا ہے کہ روزنامہ پاکستان کی نشاندہی کا نوٹس لیا جائے گا اور معطل کیے جانے والے ایس او پی پر عملدرآمد ہوگا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1