یاتریوں کو سفارتی رسائی نہیں دی گئی ، بھارت الزامات بے بنیاد ہیں : پاکستان

یاتریوں کو سفارتی رسائی نہیں دی گئی ، بھارت الزامات بے بنیاد ہیں : پاکستان

نئی دہلی/اسلام آباد (آئی این پی)بھارت نے الزام عائد کیا ہے کہ پاکستان نے اپنے ہاں تعینات سفارتی عملے کو ان بھارتی شہریوں سے ملنے سے روک دیا ہے جو ان دنوں مذہبی مقامات کی زیارت کے لیے پاکستان گئے ہوئے ہیں،دوسری جانب پاکستان نے بھارت کے سکھ یاتریوں سے ملاقات سے روکنے کے الزمات کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ بھارتی دفتر خارجہ کے الزامات بے بنیاد ، حقائق کو توڑ موڑ کر پیش کرنے کی بھارتی کوشش قابل مذمت ہے،سیکرٹری متروکہ وقف املاک بوڈر نے بھارتی ہائی کمشنر کو سکھ برداری کے اجتماع میں باضابطہ شرکت کی دعوت دی،بھارت نے خود دو دفعہ پاکستانی زائرین کو خواجہ غریب نواز عرس پر جانے کے لیے ویزے نہ دے کر اس معاہدے کی خلاف ورزی کی۔بھارتی میڈیا کے مطابق وزارت خارجہ کی طرف سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا کہ یہ ایک معمول کی کارروائی رہی ہے کہ زیارت کے لیے جانے والے شہریوں کی معاونت کے لیے ہائی کمیشن کے اہلکار ان سے رابطہ کرتے ہیں۔تاہم اس برس قونصلر ٹیم کو بھارتی سکھ یاتریوں تک رسائی کے لیے منع کر دیا گیا۔بھارت نے اس پر پاکستان سے احتجاج کیا ہے۔بھارت سے کم از کم 1800 سکھ یاتری 12 اپریل سے پاکستان کے دورے پر ہیں اور نئی دہلی کے مطابق پاکستان نے واہگہ بارڈر پر بھارتی قونصلر ٹیم کو ان یاتریوں سے ملنے سے روک دیا۔مزید برآں بھارت کے دعوے کے مطابق ہفتہ کو ان سکھ یاتریوں سے بھارتی سفارتی حکام سے ملاقات طے ہونے کے باوجود انھیں ملنے کی اجازت نہیں دی گئی جب کہ اسی روز بھارتی ہائی کمشنر جنہوں نے حسن ابدال کے نزدیک پنجہ صاحب گردوارہ کا دورہ کرنا تھا، انھیں بھی راستے سے ہی واپس چلے جانے کا کہا تھا۔نئی دہلی کے بقول اسلام آباد نے ہائی کمشنر کو "سلامتی" کی وجوہات کی بنا پر پنجہ صاحب جانے سے منع کیا گیا لیکن اس کی وضاحت نہیں کی گئی۔دوسری جانب پاکستان نے بھارت کے سکھ یاتریوں سے ملاقات سے روکنے کے الزمات کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ بھارتی دفتر خارجہ کے الزامات بے بنیاد ہیں۔ حقائق کو توڑ موڑ کر پیش کرنے کی بھارتی کوشش قابل مذمت ہے۔ ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا تھاکہ سیکرٹری متروکہ وقف املاک بوڈر نے بھارتی ہائی کمشنر کو سکھ برداری کے اجتماع میں باضابطہ شرکت کی دعوت دی۔بھارت میں سکھوں کے مذہبی رہنما بابا گرونانک کے حوالے سے متنازعہ فلمیں ریلیز ہونے پر سکھ برداری کے لوگ سراپا احتجاج تھے۔ سیکورٹی صورتحال بگڑنے کے خدشے پر سیکرٹری بورڈ نے بھارتی ہائی کمشنر کو آمد موخر کرنے کی درخواست کی۔ بھارتی حکومت کا مذہبی مقامات سے متعلق پاک بھارت طے شدہ معاہدے کی خلاف ورزی کا الزام پاکستان پر لگانا حیران کن ہے۔ بھارت نے خود دو دفعہ پاکستانی زائرین کو خواجہ غریب نواز عرس پر جانے کے لیے ویزے نہ دے کر اس معاہدے کی خلاف ورزی کی۔

بھارت،پاکستان

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...