حکومت کا سرکاری سکیم کے عازمین حج کو 4ارب کی سبسڈی دینے سے انکار

حکومت کا سرکاری سکیم کے عازمین حج کو 4ارب کی سبسڈی دینے سے انکار

لاہور(ڈویلپمنٹ سیل)وفاقی حکومت نے وزارت مذہبی امور کو سرکاری حج سکیم کے حاجیوں کے لیے4ارب روپے سبسڈی کی مد میں دینے سے انکار کر دیا، وزیر اعظم 1.9ارب روپے دینے کے لیے تیار، وزارت مذہبی امور نے وزیرا عظم ہاؤس سے سمری واپس آنے کے بعد فنانس ڈویژن کے ذریعے سمری دوبارہ وزیر اعظم کو منظوری کے لیے بھیج دی،نئی سمری میں سعودی حکومت کی طرف سے لگائے گئے 10فیصد ٹیکسز کے ساتھ ریال کی بڑھتی ہوئی قیمت کو بنیاد بنایا گیا ہے ساتھ ہی ہر صورت 4ارب روپے دینے کی درخواست کی گئی ہے ،روزنامہ پاکستان کو معلوم ہوا ہے کہ وزارت مذہبی امور نے وزیر اعظم سے درخواست کی ہے کہ حکومت اگر سبسڈی کے4ارب نہیں دے سکتی تو ہمیں سرکاری سکیم کے عازمین سے 35ہزار فی حاجی لینے کی اجازت دی جائے،وزیر اعظم کو فراہم کی گئی سمری میں80سال سے اوپر افراد اور تین سال سے مسلسل درخواستیں دینے والوں کے بغیر قرعہ اندازی کامیاب قرار دینے کی اجازت دینے کا مطالبہ کیا گیا ہے اور بقیہ 3ہزار کوٹہ کی جنرل قرعہ اندازی کرنے کی اجازت طلب کی گئی ہے ،روزنامہ پاکستان کو معلوم ہوا ہے کہ وزیر اعظم نے حاجیوں کے لیے4ارب روپے کی سبسڈی کے لیے وزارت خزانہ کی رائے طلب کی ہے ،وزارت خزانہ کی طرف سے مثبت جواب کے ساتھ ہی وزیر اعظم کی طرف سے سمری کی منظوری متوقع ہے۔

مزید : صفحہ آخر