پتنگ کے نشان کے بغیر انتخابات میں حصہ نہیں لینگے ،خالد مقبول صدیقی

پتنگ کے نشان کے بغیر انتخابات میں حصہ نہیں لینگے ،خالد مقبول صدیقی

کراچی(این این آئی)متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے بہادر آباد گروپ کے کنوینر ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی نے کہا ہے کہ اگر عدالت کے فیصلے کے نتیجے میں پارٹی کا انتخابی نشان پتنگ ہمارے پاس نہیں رہا تو ہم کسی صورت انتخابات کا حصہ نہیں بنیں گے۔ایک انٹرویومیں خالد مقبول صدیقی نے کہاکہ ہماری بدنصیبی ہے کہ پارٹی کی قیادت کا معاملہ عدالت میں گیا اور اپنے دوست کی بنیاد پر کوئی بھی ایسا کرتا تو بڑی بدنصیبی ہوتی لیکن اگر فاروق بھائی کو لگتا ہے کہ پارٹی کی آئین کی تشریح عدالت ہم سے بہتر کر سکتی ہے تو عدالت کا فیصلہ ہمیں بھی قبول ہوگا۔انہوں نے کہا کہ22 اگست 2016 کو آنے والی تبدیلی اتنی بڑی تھی کہ میں نے اسی وقت کہا تھا کہ اس کے آفٹر شاکس آئیں گے ٗاس دن کے بعد ہمارے پاس دو راستے تھے ایک یہ پارٹی کے آئین اور اصولوں کے مطابق چلا جائے یا دوسرا یہ کہ آسان راستے کا انتخاب کیا جائے، جس میں سے ہم نے مشکل راستے کا انتخاب کیا۔خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ سینیٹ کے انتخابات پہلا موقع تھا جب ایم کیو ایم کے ووٹ بکے تاہم جو حالات ہیں ان میں فروغ نسیم کی سیٹ آجانا بھی ایک معجزہ ہے ٗکچھ بہنوں کا بھی اس موقع پر پارٹی چھوڑنا ہمارے لیے بہت حیران کن تھا۔انہوں نے کہاکہ ایم کیو ایم تنظیم بنانے والوں کو اندازہ تھا کہ سندھ کے شہری علاقوں بالخصوص اردو بولنے والوں کے ساتھ کیا معاملات ہونے جارہے ہیں، 1984 میں یہ تنظیم بنی اور 1986 کے حالات نے یہ ثابت کیا کہ ان کے اندازے صحیح تھے۔

مزید : صفحہ آخر