تعلیم یافتا قومیں ہی ترقیکی منازل طے کر سکتی ہیں:محمود خان

تعلیم یافتا قومیں ہی ترقیکی منازل طے کر سکتی ہیں:محمود خان

مٹہ (نمائندہ پاکستان)خیبر پختونخوا کے وزیر آبپاشی و کھیل اور پاکستان تحریک انصاف ملاکنڈ ریجن کے صدر محمود خان نے کہا ہے کہ دنیا میں وہ قومیں اور ممالک ترقی کی دوڑ میں سب سے آگے ہیں جہاں غریب اور ا میر کو تعلیم کے حصول کے بلا امتیاز یکساں مواقع فراہم ہوں ۔تعلیم کی ضرورت انتہائی اہمیت کی حامل ہے چاہے زمانہ کتنا ہی ترقی کر لے ، آج کمپیوٹر، ایٹمی ترقی ، سائنس اور صنعتی ترقی کا دور ہے مگر سکولوں میں بنیادی عصری تعلیم ، ٹیکنیکل تعلیم ، انجینئرنگ ، وکالت ، ڈاکٹری اور مختلف جدید علوم حاصل کرنا آج کے دور کا لازمی تقاضا ہے ، اسلامی تاریخ گواہ ہے کہ مسلمانوں نے تعلیم و تربیت میں معراج پاکر دین ودنیا میں سربلندی اور ترقی حاصل کی ، تعلیم ہی کا شعبہ کسی بھی ملک کا ایسا شعبہ قرار دیا جاسکتا ہے جو دفاع اور معیشت سے بڑھ کر اہمیت کا حامل تصور کیا جا سکتا ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے کالاکوٹ راحت کوٹ مٹہ سوات میں سکول کی اپ گریڈیشن کے موقع پر منعقدہ تقریب سے خطاب کے دوران کیا ۔ محمود خان نے کہا کہ بدقسمتی سے ماضی میں ہمارے ملک اور خصوصاً خیبر پختونخوا میں تعلیمی شعبے میں دور رس نتائج کے حامل اقدامات نہیں کئے گئے جس سے ہمارا صوبہ تعلیمی میدان میں نمایاں نہ ہو سکا ۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ سابقہ ادوار میں بے شمار ایسے سکول جن کا اندراج سرکاری کاغذات میں تو موجود ہے لیکن زمین پر ان کا سرے سے کہیں وجود نہیں ،سرکاری سکولوں میں بچوں کے لئے پینے کا پانی تک میسر نہ ہوتا ، عمارت ، فرنیچر اور بیت الخلاء جیسی بنیادی ضرورت سے محروم سرکاری سکولوں کو بھوت سکول ہی کہا جاسکتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ماضی میں غربت کی چکی میں پسنے والے ناخواندہ والدین اپنے بچوں کو پڑھانے کی خواہش تو دل میں رکھتے تھے لیکن مجبوری کے سبب اپنے بچوں کو مختلف ورکشاپس میں کوئی ہنر سیکھنے پر لگادیتے ۔ انہوں نے کہا کہ انتہائی افسوس کا مقام ہے کہ محرومی کے شکار بچے مستقبل میں معاشرے کے سدھار میں کیا کردار ادا کر سکتے ہیں ۔ انہو ں نے کہا کہ ماضی میں یکساں نظام تعلیم رائج کرنے کے لئے تجاویز پیش کی جاتی رہیں تاہم ان پر عمل درآمد کی سعی قصداً نہیں کی گئی کیونکہ حکمران طبقہ یہ ہرگز نہیں چاہتا کہ ملک کی کثیر آبادی اعلیٰ تعلیم ، شعور اور آگاہی حاصل کر سکیں ۔انہوں نے کہا کہ تعلیم جیسا اہم ترین شعبہ بھی اشرافیہ کی سیاست سے نہ بچ سکا اور اپنے مذموم عزائم یہاں بھی اشکارا کئے ۔

B

مزید : کراچی صفحہ اول