’’ جسٹس اعجاز الاحسن کا گھر ہائی سیکیورٹی زون میں ہے، ان کی سیکیورٹی بھی پولیس کے پاس نہیں بلکہ ۔ ۔ ۔‘‘ سینئر صحافی کا ایسا انکشاف کہ ملزمان کو بھی چھپنے کیلئے جگہ نہیں ملے گی

’’ جسٹس اعجاز الاحسن کا گھر ہائی سیکیورٹی زون میں ہے، ان کی سیکیورٹی بھی ...
’’ جسٹس اعجاز الاحسن کا گھر ہائی سیکیورٹی زون میں ہے، ان کی سیکیورٹی بھی پولیس کے پاس نہیں بلکہ ۔ ۔ ۔‘‘ سینئر صحافی کا ایسا انکشاف کہ ملزمان کو بھی چھپنے کیلئے جگہ نہیں ملے گی

لاہور (ویب ڈیسک) سینئر صحافی اور تجزیہ نگارسلمان غنی نے بتایا  کہ جسٹس اعجاز الاحسن کی سسکیورٹی پولیس نہیں، رینجرز کے پاس ہے، جسٹس اعجاز الاحسن کی رہائشگاہ کے قریب وزیراعلیٰ پنجاب کی رہائشگاہ ہے، اس لئے یہ ہائی سکیورٹی زون ہے، وہاں کیمرے نصب ہیں، اس لئے معاملہ زیادہ دیر چھپنے والا نہیں جلتی پر تیل نہ ڈالا جائے۔

نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے سلمان غنی نے بتایاکہ واقعے کو حکومت اور عدلیہ کے درمیان محاذ آرائی کا شاخسانہ قرار نہ دیا جائے، کوئی تیسرا عنصر بھی اس میں ملوث ہو سکتا ہے، پاکستان پر جو نفسیاتی کیفیت طاری کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے ، پاکستان کیلئے اچھی نہیں۔

انہو ں نے امید ظاہر کی  کہ حکومت جلد ملزموں تک پہنچنے کی کوشش کرے ،واقعہ کی تفتیش کیلئے جے آئی ٹی یا عدالتی کمیشن کچھ بھی بنایا جا سکتا ہےجبکہ یہاں یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ حکومت پنجاب نے جے آئی ٹی کا اعلان کردیا ہے ۔ 

مزید : قومی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...