آپ کے ہاتھ میں کتنی روحانیت ہے؟وہ بات جانئے جس کے لئے لوگ بے تحاشا تگ و دو اوردعائیں کرتے ہیں

آپ کے ہاتھ میں کتنی روحانیت ہے؟وہ بات جانئے جس کے لئے لوگ بے تحاشا تگ و دو ...

لاہور(نظام الدولہ )آج کے دور میںزیادہ تر انسان اپنے اندر روحانی قوتیں بیدار کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ان میں سے بہت سے تو اپنے اندر اطمینان اور سکون کے متلاشی ہوتے ہیں اور کئی ایسے بھی ہوتے ہیں جو اپنی روحانی قوتوں سے دوسروں کا بھلا کرنا چاہتے ہیں۔جس انسان کے اندر بھی فطری طور پر روحانی قوتیں موجود ہوں ،اسکی شخصیت دوسروں سے زیادہ مونس ہوتی ہے ۔

روحانی قوت اور خصوصیات رکھنے والوں کے ہاتھوں میں بھی اسکی علامات ہوتی ہیں۔سمجھ لیجئے کہ یہ ایسی کھیتی کی زرخیزی کی علامت ہوتی ہیں اور اس بات کا اعلان کرتی ہیں کہ اگر ایسا انسان چاہے تو اپنے عمل کا بیج ڈال کر اس کھیتی کو ہرا بھرا کرسکتا ہے۔جن لوگوں کے ہاتھوں میں روحانی لکیریں موجود ہوں وہ دوسروں کی نسبت زیادہ تیزی اور دلچسپی سے روحانی علوم سیکھ لیتے ہیں۔ان کے اندر لگا قدرت کا روحانی ٹرانسمیٹر وجدانی کیفیات اور چھٹی حس کو بہت متحرک اور تیز کردیتا ہے۔اگر ان کی روحانی اور جسمانی قوت میں توازن پیدا ہوجائے تو ایسے لوگ کامیاب ترین لوگوں کی سف میں شامل ہوتے ہیں۔

ہاتھ کے تین ابھار راہو،کیتو اور جیوپیٹر میں روحانی علامتوں کو دیکھا جاسکتا ہے۔دوسرے ابھاروں سے بھی اگرچہ روحانی اشارے ملتے ہیں ۔تاہم جیوپیٹر یعنی پہلی انگلی کے نیچے والا ابھار اگر بھرا ہوا ہو اور اس پرچھوٹے دائرے ہوں،ایک بڑا سرکل بنا ہواہو تو یہ غیر معمولی روحانی قوت کی جانب اشارہ کرتا ہے ۔ایسا انسان علوم مخفی میں بھی دلچسپی لیتا ہے ۔اسکی دعا اور بددعا بھی عجیب تاثیر رکھتی ہے۔

انگلیوں سے بھی روحانی استعداد کو دیکھا جاسکتا ہے ۔جن لوگوں کی شہادت کی انگلی کی پہلی پور نوکدار ہوتی ہے ،ان میں روحانیت توہم پرستی کی جانب رخ کرلیتی ہے۔اگر تمام انگلیاں مربع ،لمبی اور ہتھیلی چوڑی ہو،انگلیاں اوپر سے مخروطی ہوں تو یہ مجذوبانہ روحانیت کی علم بردار ہوتی ہے۔

ہاتھ میں عمودی لکیریں روحانی رجحان کی عکاسی کرتی ہیں۔اوپر کی جانب اٹھنے والی لکیریں انسان کے اندر پیدا ہونے والی غیر معمولی توانائی کی علامت ہیں۔

آپ کو ایک حیران کن بات بتا دیں کہ چھوٹی انگلی جسے مرکری کی انگلی کہا جاتا ہے یہ انگوٹھے سے کافی فاصلہ پر ہوتی ہے لیکن بعض ہاتھوں پر یہ انگوٹھے سے زیادہ پاور فل ہوتی ہے۔اس میں باطنی اور جسمانی توانائیاں چھپی ہوتی ہیں۔اسکی پہلی پور میں عمودی لکیریں اس بات کا اظہار کرتی ہیں کہ اس انسان میں جسمانی قوت کو رواں رکھنے میں اسکی روحانی قوت اہم کردار ادا کرتی ہے۔اس میں جسمانی اور روحانی قوتوں کا اشتراک بہترین فیصلے کرنے میں بنیادی کردار ادا کرتا ہے۔

زندگی کی لکیر کے متوازی بھی ایک لکیر ہوتی ہے جسے زندگی کی دہری لکیر سمجھا جاتا ہے۔اس سے انسان کی باطنی قوتوں کا اندازہ لگایا جاسکتا ہے۔

جو لوگ چاہتے ہیں کہ ان کی جسمانی اور روحانی قوت میں تال میل یکساں ہو تو انہیں ہاتھوں کے ان ابھاروں پر عمودی لکیریں پیدا کرنے کی تھیراپی پر عمل کرنا چاہئے ۔ ان ابھاروں کا مساج خاص طور پر کرنا چاہئے۔یہ ایسا عمل ہے جوذہنی رجحانات تبدیل کرنے میں مدد فراہم کرتا ہے ۔( nizamdaola@gmail.com )

مزید : لائف سٹائل /مخفی علوم

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...