جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر پر فائرنگ احتساب عدالت کو ڈرانے کی کوشش ، الیکشن تاخیر سے ہوں گے: شیخ رشید

جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر پر فائرنگ احتساب عدالت کو ڈرانے کی کوشش ، الیکشن ...
جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر پر فائرنگ احتساب عدالت کو ڈرانے کی کوشش ، الیکشن تاخیر سے ہوں گے: شیخ رشید

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید احمد کا کہنا ہے کہ جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر پر فائرنگ قابل مذمت ہے، یہ واقعہ دراصل احتساب عدالت کو ڈرانے کی کوشش ہے۔

لاہور ہائیکورٹ؛نوازشریف اور مریم نواز سمیت 16 حکومتی شخصیات کے عدلیہ مخالف بیان نشر کرنے پر پابندی عائد

سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شیخ رشید احمد نے کہا کہ جسٹس اعجازالاحسن کے گھر رات کو دو بار فائرنگ کی گئی ، ان کے گھر سے حمزہ کا گھر 200 گز کے فاصلے پر بھی نہیں ہے، ’شہباز شریف صاحب کل کو یہ گولی آپ کے گھر کو بھی لگ سکتی ہے، اس الیکشن میں بڑا سانحہ ہوسکتا ہے‘۔انہوں نے کہا اس واقعے کے ذریعے نواز خاندان نے احتساب عدالت کو پیغام بھیجا ہے ، جسٹس اعجازالاحسن کے گھر پر فائرنگ صرف احتساب عدالت کو ڈرانے کی کوشش ہے کیونکہ اگلے چند ہفتوں میں وہاں سے فیصلہ آجائے گا اور ہمیں یقین ہے کہ انصاف پر مبنی فیصلہ آئے گا۔

نواز شریف، مریم نواز سمیت 16 لیگی رہنماﺅں کی عدلیہ مخالف تقاریر پر پابندی لگنے کے حوالے سے اپنے رد عمل میں شیخ رشید احمد نے کہا کہ حکومت نے گزشتہ پانچ سال میں کوئی کام نہیں کیا ، انہوں نے صرف چیف جسٹس اور اداروں کو گالی دی، ہائی کورٹ کے فیصلے کے بعد یقین ہے کہ ان کی آنکھ کے اشارے پر چلنے والے چینلز بھی ٹھیک ہوجائیں گے۔

اپنے خلاف نااہلی کے فیصلے کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے شیخ رشید احمد نے کہا کہ وہ چیف جسٹس سے اپنا کیس روزانہ کی بنیاد پر سننے کی درخواست کرنے آئے ہیں۔ وہ الیکشن کمیشن سے یہ کیس جیت چکے ہیں اور اللہ سے 120 فیصد امید ہے کہ سپریم کورٹ سے بھی ان کے حق میں ہی فیصلہ آئے گا اور اگر ان کے خلاف بھی فیصلہ آگیا تو وہ چیخیں نہیں ماریں گے۔

شیخ رشید نے کہا کہ الیکشن تھوڑی تاخیر سے ہوگا کیونکہ سارے کیسز سپریم کورٹ میں جائیں گے، اب سپریم کورٹ کتنا ٹائم لے گی یہ وقت ہی بتائے گا ۔ الیکشن ستمبر ، اکتوبر یا نومبر میں ہوسکتا ہے لیکن یہ جسٹس ثاقب نثار کے دور میں ہی ہوگا۔

مزید : اہم خبریں /قومی /سیاست /علاقائی /اسلام آباد