بلدیاتی نمائندوں کا پنجاب حکومت کے نئے بلدیاتی مسودے کو چیلنج کرنے اور احتجاج کا اعلان

بلدیاتی نمائندوں کا پنجاب حکومت کے نئے بلدیاتی مسودے کو چیلنج کرنے اور ...

لاہور ( این این آئی )بلدیاتی نمائندوں نے پنجاب حکومت کے نئے بلدیاتی مسودے کو مسترد کرتے ہوئے عدالت سے رجوع کرنے کا اعلان کر دیا ،مئیرز اور ڈسٹرکٹ چیئرمینوں نے کہا ہے کہ عوام کے مینڈیٹ کی توہین کی جارہی ہے ،کسی کو اپنے حق پر شب خون نہیں مارنے دیں گے ۔پنجاب کے 12میئرز سمیت 24ڈسٹرکٹ چیرمینوں نے لاہور میں اکٹھ کیا جس میں پنجاب حکومت نے نئے بلدیاتی مسودے پر غور و خوض کیا گیا اور اسے متفقہ طو رپر مسترد کر دیا گیا ۔پنجاب لوکل کونسل ایسوسی ایشن کے زیر اہتمام کانفرنس کا اہتمام کیا گیا جس میں صدر لوکل کونسل ایسوسی ایش پنجاب فوزیہ خالدوڑائچ ،لارڈمئیر لاہور کرنل (ر)مبشر جاوید،چیئرمین ڈسٹرکٹ کونسل شیخوپورہ راناعتیق انور،ڈسٹرکٹ چیئرمین اوکاڑہ ملک قادر علی ڈسٹرکٹ کونسل پاکپتن اسلم سکھیرا ،چیئرمین ڈسٹرکٹ کونسل ساہیوال چودھری زاہد اقبال ،چیئرمین ڈسٹرکٹ کونسل خانیوال رضاسرگانہ، چیئرمین ڈسٹرکٹ کونسل وہاڑی محی الدین چشتی، ڈسٹرکٹ چیئرمین لودھراں راجن سلطان، ڈسٹرکٹ چیئرمین ملتان عباس بخاری، ڈسٹرکٹ چیئرمینمظفر گڑھ عمر گوپانگ، میئر ملتان نوید آرائیں،میئر ساہیوال اسد خان بلوچ، میئر فیصل آباد ملک عبدالرزاق،میئر راولپنڈی نسیم احمد، میئر سرگودھا ملک نوید اسلم، ڈسٹرکٹ چیئرپرسن اٹک ایمان وسیم، ڈسٹرکٹ چیئرمین بہاولنگر قلندر شاہ، ، چیئرمین ڈسٹرکٹ کونسل لیہ محمد عمر اولکھ،ڈسٹرکٹ چیئرمین راجن پور عبدالعزیز دریشک، ڈسٹرکٹ چیئرمین جھنگ بابر سیال،چیئرمین بھکراحمد نوانی ،چیئرمین بہاولپور محمد دلشاد، چیئرمینچکوال محمد طارق،میئر گوجرانوالہ شیخ انصر، چیئرمین گوجرانوالہ مظہر قیوم ناہرہ،چیئرمین نارووال احمد اقبال سمیت دیگر کی شرکت۔ شرکاء نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نئے بلدیاتی نظام لانے سے مشکلات بڑھ جائیں گی ،بلدیاتی نمائندے ہونے کی حیثیت سے عوامی مشکلات حل کرنیوالوں پر شب خون مارا جارہا ہے ،پوری دنیا میں بلدیاتی نمائندے سب سے زیادہ مضبوط ہیں ،پاکستان میں بلدیاتی نمائندوں کا تقدس پامال کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ صوبے میں بلدیاتی نظام کا مسودہ تیار کیا گیا ہے لیکن بد قسمتی سے کسی بھی بلدیاتی نمائندے کو اعتماد میں نہیں لیا گیا ،بلدیاتی نمائندے عوام کے ووٹ سے آئے ہیں لیکن عوام کے مینڈیٹ کی توہین کی جا رہی ہے ۔مشترکہ اعلامیے میں کہا گیا کہ نئے بلدیاتی نظام کا مسودہ اورایڈمنسٹریٹرز قابل قبول نہیں ہیں ، انصاف کے لئے عدالت سے رجوع کیا جائے گااور اس کے لئے احتجاج کا راستہ بھی اختیار پڑا تو دریغ نہیں کریں گے۔سیاسی اور عدالت سمیت ہر محاذ پر جنگ لڑیں گے ،بلدیاتی ایکٹ 2019 کسی صورت اسمبلیوں سے منظور نہیں ہونے دیں گئے ۔

مزید : صفحہ آخر