فرقہ ورانہ ٹارگٹ کلنگ میں ملوث کالعد م سپا ہ محمد کے 6دہشتگرد گرفتار

فرقہ ورانہ ٹارگٹ کلنگ میں ملوث کالعد م سپا ہ محمد کے 6دہشتگرد گرفتار

  



کراچی(کرائم رپورٹر)کاؤنٹر ٹیراریزم ڈپارٹمنٹ سندھ نے کارروائی کرتے ہوئے 2003 سے فرقہ وارانہ ٹارگٹ کلنگ میں ملوث پولیس اہلکار سمیت کالعدم سپاہ محمد کے چھ دہشت گردوں کو گرفتار کرلیا، ملزمان کا گروہ 50 سے زائد افراد کے قتل میں ملوث ہے جس نے پڑوسی دوست ملک سے دہشت گردی کی تربیت حاصل کی اور باقائدہ انہیں تنخواہ بھی دی جاتی تھی، مفتی تقی عثمانی پر قاتلانہ حملے کی تحقیقات میں بھی اہم پیشرفت ہوئی ہے۔کاؤنٹر ٹیراریزم ڈپارٹمنٹ سندھ کے ڈی آئی جی عبداللہ شیخ نے پریس کانفرنس میں بتایا کہ شہر میں امن کی فضا قائم ہوتے ہی دوبارہ فرقہ وارانہ ٹارگٹ کلنگ شروع ہونے پر جب تحقیقات کی گئی تو ٹارگٹ کلر پرانے گروہ کا سراغ ملا، سی ٹی ڈی نے قتل و غارت میں ملوث پولیس اہلکار اور گروہ کے سرغنہ سمیت چھ ملزمان کو گرفتار کیاجن میں محمد حیدر عرف چھوٹا،سید مہتاب حسین عرف مچھڑ،گل اکبر عرف عبداللہ،پولیس کانسٹیبل سید حیدر عباس رضوی عرف پولیس والا،آصف رضا عرف خالد اور کامران عرف پٹھان شامل ہیں،ڈی آئی جی عبداللہ شیخ نے بتایا کہ دہشت گرد گروہ کے تین کارندوں کے نام سی ٹی ڈی کی انتہائی مطلوب ملزمان کی فہرست ریڈ بک میں بھی شامل ہیں، گرفتار ملزمان اہلسنت و الجماعت کے رہنما مولانا اورنگزیب فاروقی پر قاتلانہ حملے سمیت 2019 تک فرقہ وارانہ ٹارگٹ کلنگ کی وارداتوں میں 50 سے زائد افراد کو قتل کر چکے ہیں جن سے مزید تفتیش کے لیئے جوائنٹ انٹیروگیشن ٹیم تشکیل دی جا رہی ہے ،ایک سوال کے جواب میں ڈی آئی جی عبداللہ شیخ نے بتایا کہ مفتی تقی عثمانی پر قاتلانہ حملے کی تحقیقات میں بھی اہم پیشرفت ہوئی ہے

مزید : صفحہ اول


loading...