چارسدہ ،بھابھی کو قتل کرنے والا سفاک ملزم ایک سال بعد گرفتار

چارسدہ ،بھابھی کو قتل کرنے والا سفاک ملزم ایک سال بعد گرفتار

چارسدہ (بیورو رپورٹ) بھابھی کو قتل کرنے والا سفاک ملزم ایک سال بعد گرفتار ۔غیرت کے نام پر قتل کرنے والا ملزم بھی آلہ قتل سمیت گرفتار ۔تفصیلات کے مطابق ایس ایچ او تھانہ پڑانگ پولیس افتخار خان نے مجرمان اشتہاریوں کے خلاف جاری مہم کے دوران کامیاب کاروائی کے دوران ایک سال قبل علاقہ تھانہ پڑانگ میں زبانی تکرار کے نتیجے میں اپنے ہی بھابی کو قتل کرنے والے واقعے میں مطلوب اشتہاری زبیر ولد ایوب خان کو ڈرامائی انداز میں گرفتار کرکے آلہ قتل بھی برآمد کر لیا ۔اس حوالے سے ڈی ایس پی بشیر گل نے میڈیا کو تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ ایک سال قبل مدعی مقدمہ طارق ولد ایوب نے تھانہ پڑانگ میں رپورٹ درج کی تھی کہ ان کے بھائی زبیر نے بہ ارادہ قتل مجھ پر اور میری بیوی پر فائرنگ کی جس کے نتیجے میں ان کی بیوی جان بحق ہو گئی تھی ۔ پڑانگ پولیس نے اشتہاریوں کے خلاف جاری مہم میں ملزم کو ا لہ قتل سمیت گرفتار کر لیا ہے اور ان سے مزید تفتیش جاری ہے ۔ دوسری طرف سرڈھیری پولیس نے اندھے قتل کیس کا پردہ پاش کر کے ملزم ارشد ولد شاہ نواز کو گرفتار کرکے ان سے آلہ قتل برآمد کرلیا ۔ اس حوالے سے ڈی ایس پی فضل شیر خان نے میڈیا کو بتایاکہ تھانہ سرڈھیری پولیس کو پلوسہ میں نہر کے کنارے ایک لاوارث نعش پڑی ہے۔اطلاع پر ایس ایچ او تھانہ سرڈھیری علی اکبر خان موقع پر پہنچ گئے اور نعش کو پوسٹ مارٹم کے لئے بھیج دیا گیا اور نامعلوم ملزمان کے خلاف تھانہ سرڈھیری میں مقدمہ درج کیا گیا۔اندھے قتل کیس کے واقعہ کا سختی سے نوٹس لیتے ہوئے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر عرفان اللہ نے ایس پی انوسٹی گیشن چارسدہ نذیر خان کی سربراہی میں ڈی ایس پی سرڈھیری فضل شیر خان ، ایس ایچ او تھانہ سرڈھیری علی اکبر خان اور انوسٹی گیشن آفیسر نصراللہ خان پر مشتمل تفتیشی ٹیم تشکیل دے کر جلد از جلد ملزمان کی گرفتار اور آلہٰ قتل کی برآمدگی کا ٹاسک سونپ دیا۔ تفتیشی ٹیم نے جدید سائنسی خطو ط سے استفادہ حاصل کرتے ہوئے ملزم ارشد ولد شاہ نواز عرف ڈاکٹر ساکن پلوسہ تک رسائی حاصل کرتے ہوئے گرفتار کیا۔ ملزم کے قبضہ سے آلہٰ قتل بھی برآمد کیا گیا۔ ملزم نے اپنے جرم کا اعتراف کرتے ہوئے بتایا کہ مقتول معظم میرے چچا کا بیٹا تھا اور گھر میں غلط حرکات پر دیکھنے کی وجہ سے غیرت کے نام پر قتل کیا ہے ۔ملزم سے مزید تفتیش جاری ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر