جندول ،تمام ہسپتالوں کی حالت خراب ،عوام کو مشکلات

جندول ،تمام ہسپتالوں کی حالت خراب ،عوام کو مشکلات

  



جندول(نمائندہ پاکستان)سب ڈویژن جندول کی تمام کٹگری ڈی ہسپتالوں کا برا حال نے جندول کے عوام کو شدید مشکلات میں مبتلا ہوگیاہے معیاروں بشمول منڈا اور ثمرباغ ہسپتالوں کا برا حال ثمرباغ کٹگری ڈی ہسپتال گائنی وارڈ سے کئی سالوں سے گائنی وارڈ کو خالہ اور نرسوں سے چلائی جاتی ہے جبکہ معیار کٹگری ڈی ہسپتال سپشلسٹ ڈاکٹر رناہونے کے وجہ سے لوگ ڈی ایچ کیو تمرگرہ اور دیگر ہسپتالوں میں علاج کروانے کیلئے جاتے ہے جس پر علاقائی ایم این اے اور ایم پی اے سمیت صوبائی حکومت خاموش تماشائی بنے ہے زریع کے مطابق جندول کے تمام ہسپتالوں میں مریضوں کو کوئی سہولیت میسر نہیں جس پر ڈی جی سیکٹری ہلتھ خیبر پختونخوا نے نوٹس لے لیا تھا اور جندول کا دورا کرتے وقت کئی ڈاکٹروں کو جندول کے تینوں کٹگری ڈی ہسپتالوں کو ٹرانسفرکیا گیا تھا مگر ڈاکٹروں نے اس وقت ڈی جی سیکٹری ہلتھ کے فیصلے پر عمل درآمد نہیں کیں اور ڈی جی سیکٹری ہلتھ کے فیصلے مانگنے سے صاف انکار کردیا تھا اور اس دن سے تمام ڈاکٹروں نے تحریک انصاف کے صوبائی حکومت سے اپنے اپنے ٹرانسفر کو کینسل کردیا مزید یہ کہ جندول میں کئی سال پہلے جماعت اسلامی کے کوششوں سے کرروڑوں کے لاگت سے تین بڑے بڑے کٹگری ڈی ہستال بنایا گیا ہے جس میں ڈاکٹرز سٹاف کمی کے وجہ سے لوگ تمرگرہ اور پشاور کو جانے پر مجبور ہے علاقائی لوگوں نے حکومت کے بجائے پاک ارمی سے مطالبہ کیا کہ معیارو کٹگری ڈی سمیت دیگر دو ہسپتال منڈا اور ثمرباغ میں جندول عوام کے لئے ہفتہ وار او پی ڈی قائم کریں تکہ لوگوں کو اسانیا پیدا ہوجائے

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...