’میرا انٹرویو کرنے والے ٹی وی چینل کو لائسنس منسوخی کی دھمکی دی گئی اس لیے اب یہ کام کرنے جارہا ہوں‘

’میرا انٹرویو کرنے والے ٹی وی چینل کو لائسنس منسوخی کی دھمکی دی گئی اس لیے اب ...
’میرا انٹرویو کرنے والے ٹی وی چینل کو لائسنس منسوخی کی دھمکی دی گئی اس لیے اب یہ کام کرنے جارہا ہوں‘

  

لندن (ڈیلی پاکستان آن لائن) سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے مین سٹریم میڈیا پر جگہ نہ ملنے کے باعث اظہار رائے کیلئے سوشل میڈیا پلیٹ فارم کو استعمال کرنے کا اعلان کردیا۔

اسحاق ڈار کاویڈیو پیغام ان کے صاحبزادے اور نواز شریف کے داماد علی ڈار نے ٹوئٹر پر شیئر کیا۔ اسحاق ڈار نے اپنے پیغام میں خود پر لگنے والی مبینہ پابندی کے بارے میں بات کی اور بتایا کہ وہ 2 روز قبل ایک ٹی وی چینل کو انٹرویو دے رہے تھے کہ انٹرویو کے دوران ہی پیمرا کی جانب سے دھمکی دی گئی کہ اگر انٹرویو بند نہ ہوا تو چینل کا لائسنس منسوخ کردیا جائے گا جس پر انہوں نے مجبور ہو کر میرا انٹرویو ختم کردیا۔

اسحاق ڈار نے کہا افسوس ہے کہ عمران خان نیازی خود 2 سال سے زیادہ عرصہ مفرور تھا لیکن ان کے ٹی وی پر انٹرویوز ہوتے تھے ، اس وقت مسلم لیگ ن کی حکومت تھی لیکن ہماری حکومت نے ایسی کوئی قدغن نہیں لگائی، جنرل مشرف نے 2 بار آئین توڑا، ججز کو قید کیا، بینظیر بھٹو اور اکبر بگٹی کے قتل میں ملوث ہے لیکن وہ میڈیا ٹاک کر رہا ہے۔’ اگر میں اس حکومت کے جھوٹ کا پردہ فاش کرتا ہوں اور یہ بتاتا ہوں کہ اصلیت کیا ہے تو میں اپنا فرض ادا کر رہا ہوں، اپنی آواز سوشل میڈیا کے ذریعے اٹھاﺅں گا اور حق کا یہ سلسلہ جاری رہے گا‘۔

مزید : قومی /برطانیہ /سیاست