تبدیلی کہیں نظر نہیں آتی، حکومت آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک کے ساتھ ہونے والے معاہدے قوم کے سامنے لائے:امیر العظیم

تبدیلی کہیں نظر نہیں آتی، حکومت آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک کے ساتھ ہونے والے ...
تبدیلی کہیں نظر نہیں آتی، حکومت آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک کے ساتھ ہونے والے معاہدے قوم کے سامنے لائے:امیر العظیم

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لان)امیرجماعت اسلامی صوبہ وسطی پنجاب امیر العظیم نے کہا ہے کہ حکومت آئی ایم ایف کے تحت ملنے والے رقم کو کن شرائط پر وصول کررہی ہے ؟معاہدے کو قوم کے سامنے لایا جائے، آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک سے قرض لے کر کبھی پاکستان ترقی و خوشحالی کی منازل طے نہیں کرسکتا ،دنیا میں ایسی کوئی مثال نہیں جس نے قرض لے کر ترقی کی ہو، ملک میں پہلے ہی مہنگائی بے قابو ہوچکی ہے جبکہ آئی ایم ایف کی شرائط پر قرض لینے سے ملک میں مہنگائی کا نہ تھمنے والا نیا طوفان آئے گا،حکمرانوں کے پاس کوئی معاشی وژن نہیں ہے۔

امیر العظیم نے کہا کہ ادویات کی قیمتوں میں دو سو فیصد تک اضافے کو واپس لینے کا حکم دیا تھا ، آج کئی دن گزر چکے ہیں نہ ادویات کی قیمتوں میں اضافے کو واپس لیا گیا اور نہ ہی حکومت نے اس مجرمانہ اقدام کے خلاف کوئی کارروائی عمل میں لائی ہے، تحریک انصاف کی حکومت کے غیر دانشمندانہ اقدامات کے باعث ملک میں ہر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والا شخص حیران و پریشان ہے،لوگوں کو ریلیف نام کی کوئی چیز میسر نہیں۔ انھوں نے کہا کہ رمضان المبارک کی آمدسے قبل ہی ملک میں ناجائزمنافع خوراور ذخیر ہ اندوز سرگرم ہوگئے ہیں۔ اشیائے خوردونوش کے نرخ آسمان سے باتیں کررہے ہیں، ادارہ شماریات کی تازہ رپورٹ کے مطابق صرف ایک ہفتے کے دوران مہنگائی میں 12فیصد تک اضافہ ہوچکا ہے جوکہ حکمرانوں کی ناقص کارکردگی کا منہ بولتا ثبوت ہے، پرائس کنٹرول کمیٹیاں عملاً غیر فعال ہیں،گراں فروش عوام کو دونوں ہاتھوں سے لوٹنے میں مصروف ہیں،ان کے خلاف سخت ایکشن ہونا چاہیے۔ امیر العظیم نے مزیدکہا کہ رہی سہی کسر گیس کے نرخوں میں 141فیصد تک زیر غور لانے کی خبر نے پوری کردی ہے،پہلے ہی گیس ، بجلی اور پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ہوشر با اضافہ ہوچکا ہے،عوام کی زندگی اجیرن ہوچکی ہے،موجودہ حکمران بھی ماضی کی حکومتوں کے نقش قدم پر چل رہے ہیں، لوگوں میں مایوسی پھیل رہی ہے۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور