بیٹے کے قاتلوں کی گرفتاری کیلئے شہری وزیر اعلیٰ کی گاڑی کے آگے لیٹ گیا، پولیس اہلکاروں نے اٹھا کر سڑک کنارے پٹخا تو عثمان بزدار نے کیا رد عمل دیا؟

بیٹے کے قاتلوں کی گرفتاری کیلئے شہری وزیر اعلیٰ کی گاڑی کے آگے لیٹ گیا، پولیس ...
بیٹے کے قاتلوں کی گرفتاری کیلئے شہری وزیر اعلیٰ کی گاڑی کے آگے لیٹ گیا، پولیس اہلکاروں نے اٹھا کر سڑک کنارے پٹخا تو عثمان بزدار نے کیا رد عمل دیا؟

  

گوجرانوالہ (ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان کے دورہ گوجرانوالہ کے دوران ایک شہری انصاف کے حصول کیلئے ان کی گاڑی کے آگے لیٹ گیا۔ سکیورٹی اہلکاروں نے فریادی کو اٹھا کر سڑک کنارے پٹخا تو وزیر اعلیٰ نے گاڑی رکوا کر اس کی درخواست لے لی۔

وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے منگل کو گوجرانوالہ کے دورے کے دوران ڈسٹرکٹ جیل کا دورہ کیا اور قیدیوں سے ملاقات کی۔ اس موقع پر انہوں نے جیل انتظامیہ کو ہدایت کی کہ وہ قیدیوں کے ساتھ حسن سلوک کا مظاہرہ کرے تاکہ وہ معاشرے کے اچھے شہری بن سکیں۔

وزیر اعلیٰ پنجاب ڈسٹرکٹ جیل کا دورہ کرکے باہر نکلے تو ایک شہری ان کے قافلے کے آگے لیٹ گیا اور انصاف کیلئے دہائیاں دینے لگا۔ اس موقع پر پولیس، وارڈن اور ایلیٹ فورس کے اہلکاروں نے وزیر اعلیٰ کی سکیورٹی کے ساتھ مل کر فریادی کو اٹھا کر سڑک کنارے پٹخ دیا لیکن اس نے ہاتھ اٹھا کر وزیر اعلیٰ کو اپنی طرف متوجہ کرلیا۔ سردار عثمان بزدار نے شہری کو دیکھ کر گاڑی روکی اور اس کی درخواست لے لی۔ وزیر اعلیٰ چند لمحوں تک وہاں رک کر شہری کی درخواست کا جائزہ لیتے رہے اور ہاتھ ہلا کر چلے گئے۔ اس دوران فریادی کو گاڑی کے قریب نہیں آنے دیا گیا اور نہ ہی وزیر اعلیٰ نے اسے اپنے پاس بلایا۔

وزیر اعلیٰ پنجاب کی گاڑی کے آگے لیٹنے والے شخص محمد احمد کا کہنا ہے کہ اس کے بیٹے حماد کو 3 اپریل کو قتل کیا گیا لیکن صدر پولیس ملزمان کو گرفتار نہیں کر رہی اور ٹال مٹول سے کام لے رہی ہے۔ وزیر اعلیٰ کے درخواست وصول کرنے کے بعد سکیورٹی اہلکار شہری کو اپنے ساتھ لے گئے۔

مزید : علاقائی /پنجاب /گوجرانوالہ