کرونا کے باعث صوبے بھر میں رمضان بازار نہ لگائے جائیں: عبد العلیم خان

    کرونا کے باعث صوبے بھر میں رمضان بازار نہ لگائے جائیں: عبد العلیم خان

  

لاہور(لیڈی رپورٹر) سینئر وزیر پنجاب و وزیر خوراک عبدالعلیم خان کی زیر صدارت پنجاب کی کابینہ کمیٹی کے اجلاس میں وزیر اعلیٰ پنجاب کو سفارش کر دی گئی ہے کہ کرونا کے باعث موجودہ صورتحال کے پیش نظر اس سال صوبے بھر میں کہیں بھی رمضان بازار نہ لگائے جائیں اور نہ ہی ٹرکوں اور سیل پوائنٹس کے ذریعے اشیائے خوردونوش کی فروخت کی جائے البتہ شہریوں کو کیش کی صورت میں ڈائریکٹ ریلیف دینے کیلئے اقدامات کیے جائیں جس کیلئے وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کل اس کی حتمی منظوری دیں گے، جس کے بعد پنجاب بھر میں ضلعی سطح پر رمضان کے حوالے سے ریلیف کی فراہمی کا طریقہ کار طے کیا جائے گا،جس میں لوگوں تک کیش کی تقسیم ممکن بنائی جائے گی۔کابینہ کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے سینئر وزیر پنجاب عبدالعلیم خان کا کہناتھا کہ شہریوں کو ہر حال میں ڈائریکٹ ریلیف دیں گے البتہ ریلیف کیلئے کسی کی زندگی کو خطرے میں نہیں ڈالا جا سکتا اور ہمیں ہر حال میں حفاظتی اقدامات کو پیش نظر رکھنا ہے۔اجلاس میں وزیر قانون پنجاب راجہ محمد بشارت،وزیر خزانہ ہاشم جواں بخت اور وزیر صنعت میاں اسلم اقبال نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں عام آدمی کی مشکلات کو کم سے کم کرنے کیلئے بالخصوص رمضان المبارک میں خصوصی اقدامات کرنے ہیں،البتہ موجودہ صورتحال کا تقاضا ہے کہ کوئی ایسی سرگرمی نہ کی جائے جس سے کسی کی زندگی کو خطرہ ہو۔اجلاس میں بجلی کے بلوں اور دیگر ذرائع سے شہریوں کو ڈائریکٹ کیش ریلیف فراہم کرنے سمیت مختلف آپشنز پر غور کیا گیا۔سینئر ممبر بورڈ آف ریونیوسمیت زراعت،انڈسٹریز،لائیو سٹاک او ر محکمہ خوراک کے سیکرٹری صاحبان نے بھی اجلاس میں شرکت کی اور اپنے اپنے محکموں کے حوالے سے رمضان میں ممکنہ ریلیف پر تجاویز پیش کیں۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ پنجاب کے36میں سے30اضلاع کے ڈپٹی کمشنر صاحبان نے بھی رمضان بازار نہ لگانے کی حق میں رائے دی ہے،جبکہ گندم کی خریداری اور کرونا کے باعث ہر جگہ ضلعی انتظامیہ پہلے ہی کافی دباؤ میں ہے۔اس لیے رمضان بازار لگانے کی بجائے شہریوں کو دیگر ذرائع سے ریلیف دینے کی سفارش کی جا رہی ہے۔

عبدالعلیم خان

مزید :

صفحہ آخر -