جنوبی پنجاب میں 306فو ڈ پوائنٹس کی چیکنگ‘ متعدد کو وارننگ نوٹس

جنوبی پنجاب میں 306فو ڈ پوائنٹس کی چیکنگ‘ متعدد کو وارننگ نوٹس

  

ملتان ( کورٹ رپورٹر  ) کورونا وائرس کے پیش نظر پنجاب فوڈ اتھارٹی کے اسپیشل آپریشنز جاری ہیں عوام کومحفوظ خوراک فراہم کرنے کیلئے فوڈسیفٹی ٹیمز کی حفاظتی لباس پہن کر خصوصی ہدایات جاری دیدی ہیں ، تھرمل گنز کی مدد سے فوڈ آپریٹرز کی سکریننگ کی گئی،جنوبی(بقیہ نمبر35صفحہ7پر)

پنجاب میں 306فوڈ پوائنٹس کی چیکنگ، حفظان صحت کے اصولوں کی خلاف ورزی پر28 فوڈ پوائنٹس کو51,000 کے جرمانے عائد ملتان15 اپریل: ڈائریکٹر جنرل پنجاب فوڈ اتھارٹی عرفان نواز میمن کی جاری کردہ ہدایات پر عمل کرتے ہوئے فوڈ سیفٹی ٹیموں نے ملتان، بہاولپور اور ڈی جی خان کے مختلف اضلاع میں کاروائیاں کرتے ہوئے کورونا وائرس سے متعلق احتیاطی تدابیر پر عمل درآمد کیلئے دوکانوں میں خوراک کو صحت بخش بنانے کیلئے ہدایات جاری کیں۔ جنوبی پنجاب بھر میں 306فوڈ پوائنٹس کو وباء سے متعلق ضروری ہدایات جاری کی گئیں اورصفائی کی ناقص صورتحال پر218 فوڈیونٹس کو اصلاحی نوٹسز بھی جاری کر دیئے گئے۔اس کے علاوہ حفظان صحت کے اصولوں کی خلاف ورزی کرنے پر 51,000روپے کے جرمانے عائد کیے گئے اورمضر صحت خوراک کو موقع پر تلف کیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق کورونا وائرس کے پیش نظر مکمل احتیاط برتنے,خوراک کو محفوظ رکھنے اورشاپس پر کام کرنیوالے ورکرز کو کرونا وائرس سے بچنے کیلئے ہدایاتی پرچے تقسیم کیے گئے۔ ان حالات میں خوراک کی فراہمی کے ساتھ ساتھ غذا کو محفوظ رکھنا بہت ضروری ہے۔ ملتان ڈویڑن میں 111فوڈپوائنٹس کو چیک کرتے ہوئے69کو وارننگ نوٹس جاری کیے گئے جبکہ 12پوائنٹس کو 21ہزار کے جرمانے عائد کیے گئے۔اسی طرح بہاولپورڈویڑن میں 72فوڈ یونٹس کو چیک کرتے ہوئے 65کو بہتری کے احقامات جاری کیے گئے جبکہ 5 فوڈ پوائنٹس کو 11ہزار کے جرمانے عائد کیے گئے۔مزیدڈی جی خان ڈویڑن میں 123فوڈ پوائنٹس کو چیک کرتے ہوئے 84کو وارننگ، جبکہ 11پوائنٹس کو 19ہزار کے جرمانے عائد کئے گئے۔چیکنگ کے دوران تمام فوڈ پوائنٹس کوکورونا سے بچاؤ کے لیے مثبت اقدامات اٹھانے اور دوکانوں میں صفائی کی صورتحال کو بہتر بنانے کے لیے ضروری ہدایات دی گئیں۔ دوران کاروائی جنوبی پنجاب کے مختلف اضلاع میں 75لیٹر مضر صحت اور ملاوٹی دودھ، 24لیٹر ایکسپائرڈ بیورجز، 15کلوحشرات زدہ ملک کریم اور8کلو ریڈ چلی پاؤڈر کو موقع پر تلف کیا گیا۔اسی طرح مظفرگڑھ میں کاروائی کرتے ہوئے انڈسٹریل ویسٹ اور سیورج سے سیراب کی جانے والی3کینال ٹماٹر کی فصل کو ہل چلا کر تلف کر دیا گیا۔سبزیاں مظفرگڑھ میں واقع ریلوے روڈ کے قریب کاشت کی گئی تھیں۔ زہریلے پانی سے اگی سبزیوں میں شامل زہریلے مادے خوراک کا حصہ بن کر متعدد موذی بیماریوں کا سبب بنتے ہیں۔ انڈسٹریل ویسٹ اور سیوریج کے پانی سے صرف آؤٹ ڈور پلانٹس، پٹسن اور دیگر ڈیکوریشن پلانٹس اگائے جاسکتے ہیں۔ جن علاقوں میں نہری یا ٹیوب ویل کا پانی دستیاب نہیں وہاں صرف غیر خوردنی فصلیں اگا ئیں۔غیر خوردنی فصلوں میں بانس، پٹ سن، ان ڈور پلانٹس، نمائشی پھول سمیت متعدد فصلیں شامل ہیں۔کسان گندے پانی سے سبزیاں یا کھانے والی فصلیں ہرگز سیراب نہ کریں ورنہ کھڑی فصل تلف کر دی جائے گی،

نوٹس

مزید :

ملتان صفحہ آخر -