لاک ڈاون، اونٹنی کا دودھ بیچنے والوں نے قیمتیں آدھی کردیں

  لاک ڈاون، اونٹنی کا دودھ بیچنے والوں نے قیمتیں آدھی کردیں

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)پورے ملک میں کورونا وائرس لاک ڈاون کے دوران جہاں ہر شعبہ زندگی کے لوگ مختلف مشکلات کا شکار ہیں ایسے میں کراچی میں اونٹنیوں کا شفا بخش تازہ دودھ فروخت کرنے والے خانہ بدوشوں نے اخراجات پورے کرنے کے لیے دودھ کی قیمت آدھی کردی ہے۔سنت اور شفا بخش ہونے کی وجہ سے کراچی میں اونٹنی کے دودھ کی دکانیں کھل چکی ہیں لیکن لوگ اونٹوں کے ساتھ ڈیرا لگائے ہوئے خانہ بدوشوں سے ہی دودھ خریدنے کو ترجیح دیتے ہیں کیونکہ وہ یہ خانہ بدوش ان کے سامنے تازہ دودھ دھو کر گاہکوں کو دیتے ہیں۔ عام دنوں میں اونٹنی کا تازہ دودھ تین سو روپے فی کلو گرام کے حساب سے ہاتھوں ہاتھ فروخت ہوجاتا ہے لیکن اب کورونا وائرس کے لاک ڈاون کی وجہ سے یہ لوگ بھی مشکلات کا شکار ہیں اور ان کے مویشیوں کے چارے کے اخراجات بھی پورے نہیں ہو رہے۔ کراچی کے علاقے لیاری میں لی مارکیٹ کے قریب سڑک کنارے ڈیرہ لگائے بیٹھے خانہ بدوش موجودہ صورتحال میں جیسے تیسے کرکے اپنا اور بیوی بچوں کا پیٹ پال رہے ہیں ایسے میں اب سب کچھ بن ہونے کہ وجہ سے ان کے لیے اپنے اونٹوں کے چارے کے اخراجات پورے کرنا مشکل ہورہا ہے جس کی وجہ سے یہ غریب لوگ اونٹنی کا تازہ دودھ ڈیڑھ سو روپے فی کلوگرام فروخت کرنے پر مجبور ہیں پھر بھی گاہک مشکل سے مل رہے ہیں۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -