میرپورخاص، پولیس کا نائب صدر نیشنل پریس کلب پر وحشیانہ تشدد

میرپورخاص، پولیس کا نائب صدر نیشنل پریس کلب پر وحشیانہ تشدد

  

میرپورخاص(بیورورپورٹ)میرپورخاص کے صحافی اور مقامی میڈیکل اسٹور کے مالک پر پولیس کا وحشیانہ تشد د،ڈئی آئی جی میرپورخاص نے ملوث ٹاؤن پولیس کے اہلکاروں کو معطل کر دیا اور ڈی ایس پی سٹی کو انکوائری آفیسر مقرر کر کے ہدایت کی کہ 2 دن میں انکوائری رپورٹ انہیں پیش کی جائے،تفصیلات کے مطابق سینئر نائب صدر نیشنل پریس کلب میرپورخاص اور مقامی اسٹار میڈیکل اسٹور کے مالک فہد ملک کو ٹاؤن پولیس کے اہلکار نے اشارے سے میڈیکل اسٹور سے باہر بلوایا اور کھڑی ہوئی موٹر سائیکل کی حوا نکالنے کی کوشش کی جس پر انہوں نے اپنا صحافی ہونے کا تعرف کروایا جس پر نا معلوم ٹاؤن تھانے کے اہلکارنے ڈنڈے کے ساتھ ان پر بے دردی سے حملہ کر دیا جس سے انہیں شدید جسمانی چھوٹیں آئیں پولیس اہلکار نے انہیں گریبان سے پکڑ کر اور گھسیٹ تے ہوئے فاصلے پر کھڑی ہوئی موبائل تک لے گیا جہاں دوبارہ تشدد کرنے کی کوشش کی جس پر ایس ایچ او ٹاؤن غازی خان راجڑ نے حملہ آور سپاہی کو روکا اور صحافی کو اس کے شکنجے سے چھڑوا کر آزاد کیا اس ہی دوران نیشنل پریس کلب میرپورخاص کا ایک وفد صدر سہیل احمد خان اور جنرل سیکریٹری سید لیاقت علی حسین شاہ بخاری کی قیادت میں ڈی آئی جی میرپورخاص ذوالفقار لاڑک سے ملاقات کر کے شکایت کی جس پر انہوں نے دونوں ملوث سپاہیوں کو فوراًمعطل کر کے انکوائری آرڈر کر دی اور ڈی ایس پی سٹی کو انکوائری آفیسر مقرر کر کے دو دن میں رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی،بعدازاں نیشنل پریس کلب میرپورخاص کا ہنگامی اجلاس صدر سہیل احمد خان کی صدارت میں منعقد ہوا جس میں ٹاؤن تھانے کی پولیس کی غنڈا گردی کلے خلاف سخت مذمت کی گئی،اجلاس میں صحافی فہد ملک نے اپنے خلاف ہونے والے نا خوش گوار واقعے کو تفصیل سے بیان کیا اور بتایا کہ ان پر جو حملہ ہوا ہے وہ پلاننگ کے تحت کیا گیا ہے اور کچھ پرائیوٹ لوگ بھی اس میں ملوث ہیں،

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -