"یہ ہوتا ہے لیڈر یہ ہوتا ہے ویژن! ایدھی کو سب چندہ دیتے ہیں لیکن ہمارے وزیراعظم نے تو۔ ۔ ۔ معروف صحافی نے ایسی بات کہہ دی کہ سوشل میڈیا پر ہنگامہ برپا ہوگیا

"یہ ہوتا ہے لیڈر یہ ہوتا ہے ویژن! ایدھی کو سب چندہ دیتے ہیں لیکن ہمارے ...

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)ملک بھرمیں کورونا وائرس سے نمٹنے اور مالی مسائل پر قابو پانے کیلئے وفاقی حکومت جہاں دیگر اقدامات کررہی ہے وہیں اس حوالے سے عطیات جمع کیے جانے کا سلسلہ بھی جاری ہے۔ اسی سلسلے میں ایدھی فاونڈیشن کی جانب سے بھی وزیراعظم عمران  خان کو عطیہ دیا گیا۔

ایدھی فاونڈیشن کے بانی عبدالستار ایدھی مرحوم کے صاحبزادے نے وزیراعظم آفس میں عمران خان کو ایک کروڑ روپے کا چیک دیا جس پر وزیراعظم کو تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

چیک دیے جانے کی تصویر کو شیئر کرتے ہوئے معروف صحافی اسد علی طور نے ٹویٹ کیا کہ''ایدھی کو سب چندہ دیتے ہیں ہمارے وزیراعظم نے ایدھی سے بھی ایک کروڑ لے لیا۔۔ یہ ہوتا ہے لیڈر یہ ہوتا ہے ویژن!"

اسد علی کے ٹویٹ پر لوگوں نے عمران خان کو تنقید کا نشانہ بنانے کے ساتھ ساتھ فیصل ایدھی کے حوالے سے بھی سوالات اٹھائے ہیں۔ 

ڈیول ایڈووکیٹ نامی ایک صارف نے سوال اٹھایا کہ "کیا شوکت خانم ہسپتال جو ایدھی کی طرح چندے پہ چلنے والا ادارہ اس نے بھی وزیر اعظم کو کوئی چندہ دیا ہے؟؟"

سہیل قریشی نے سوال اٹھایا کہ "فیصل ایدھی صاحب سے زرا پوچھیں کہ انہوں نے یہ رقم اپنی ذاتی جیب / کاروبار سے دی ہے یا ایدھی فاؤنڈیشن کے فنذز سے دی ہے ؟؟؟؟ اگر ذاتی طور پر دی ہے تو بہتر ورنہ میرے خیال میں فیصل صاحب نے امانت میں خیانت کی ہے کیونکہ لوگوں نے یہ پیسہ انہیں کسی کاز کیلیۓ دیا تھا نہ کہ ۔۔۔۔"

گل زمان نے لکھا کہ "کورونا سے ڈرنا نہیں چندہ اکٹھا کرنا ہے"

اس ٹویٹ پر صرف عمران خان او ر ایدھی کی مخالفت ہی دیکھنے کو نہیں ملی بلکہ کچھ لوگوں نے اس اقدام کا دفاع بھی کیا۔ دفاع کرنے والے ایک صارف قیصر حسن نے لکھا کہ یہ اعتماد ہے کہ لنڈن میں فلیٹس نہیں بنیں گے۔۔

طارق عزیز نامی ایک صارف نے صحافی اسد علی سے سوال کیا کہ آپ کو کیسے معلوم ہے کہ یہ چندہ عمران خان لے رہا ہے یا ایدھی فاونڈیشن کو دے رہا ہے؟

طارق کے سوال پر ایدھی نے پی ٹی وی نیوز کا ایک ٹویٹ شیئر کرتے ہوئے اپنی خبر کی تصدیق کی۔

مزید :

قومی -