پاور سیکٹر انکوائری رپورٹ، وزیراعظم کے معاون خصوصی ندیم بابر کا نام بھی سامنے آگیا لیکن پھر موقف کیا اپنایا؟ پاکستانی حیران پریشان رہ گئے

پاور سیکٹر انکوائری رپورٹ، وزیراعظم کے معاون خصوصی ندیم بابر کا نام بھی ...
پاور سیکٹر انکوائری رپورٹ، وزیراعظم کے معاون خصوصی ندیم بابر کا نام بھی سامنے آگیا لیکن پھر موقف کیا اپنایا؟ پاکستانی حیران پریشان رہ گئے

  

اسلام آباد (ویب ڈیسک) پاور سیکٹر انکوائری رپورٹ میں وزیراعظم کے معاون خصوصی ندیم بابر  کا نام بھی سامنے آگیا جو آئی پی پیز کے دفاع میں سامنے آگئے، نجی ٹی وی چینل کے مطابق عمران خان کی پالیسی کی بجائے آئی پی پیز کے شانہ بشانہ کھڑے ہو گئے۔

92 نیوز  نے دعویٰ کیا ہے کہ وزیراعظم کے معاون خصوصی ندیم بابر نے وفاقی وزیر پاور ڈویڑن عمر ایوب کو خط لکھ کر مذاکراتی کمیٹی کے سربراہ وفاقی وزیر عمر ایوب کی سوچ بدلنے کی کوشش کی۔رپورٹ میں بتایا گیا کہ  ندیم بابر کے پاورپلانٹ، اورینٹ نے ایک سال میں 2 ارب روپے اضافی منافع کمایا ہے جبکہ ندیم بابر کا موقف ہے کہ وہ اورینٹ پاور میں حصہ دار ہیں جس نے 2 ارب نہیں صرف 16 کروڑ روپے فیول کھپت میں بچائے ہیں۔ندیم بابر کا کہنا ہے کہ وہ انکوائری رپورٹ سے مایوس ہوئے ہیں۔ اپنے خط میں انہوں نے لکھا کہ آئی پی پیز پر الزامات کی بجائے اعتماد کا ماحول بنائیں، صرف چند آئی پی پیز نے اضافی منافع کمایا ہے۔

ادھر صحافی اسد علی طور نے اسی رپورٹ کے سکرین شاٹ شیئرکرتے ہوئے لکھا کہ ’’وزیراعظم عمران خان کے ایک اور “کاروباری” معاونِ خصوصی نے بھی دو ارب روپے عوام کی جیب سے نکلوا لیے، صاف چلی شفاف چلی تحریکِ انصاف چلی!‘‘

ان کی اس ٹوئیٹ پر ایک صارف نے طنز کرتے ہوئے لکھا کہ’’ہینڈسم وزیراعظم کا ایمانداروں کا ٹولہ‘‘

ایک اور صارف نے احتساب کو مزید آگے بڑھنے کی نوید سناتے ہوئے لکھا کہ ’’سب پکڑے جائیں گے‘‘

خان احمد نے لکھا کہ ’’اسد علی بھائی ایک بات پوچھوں اس سے پہلے کھبی یہ سنا تھا ؟ کہ حکومت وقت کے اندر بندے ننگے ہو رہے ہیں ان سے حساب لیا جائے گا بس تھوڑا وقت لگے گا اور بھی آستین کے سانپ دیکھیں گے‘‘

ایک اور صاحب نے لکھا کہ سارے پکڑے جائٰیں گے، انہی کے لیے تو انکوئری ہو رہی ہے۔۔معاون خصوصی کے علاوہ بھی ہیں۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -