"صرف یہ ایک چیز پوری دنیا کے معمولات بحال کرسکتی ہے"، اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل عالمی لاک ڈاون پر بول اٹھے

"صرف یہ ایک چیز پوری دنیا کے معمولات بحال کرسکتی ہے"، اقوام متحدہ کے سیکرٹری ...

  

نیویارک(ڈیلی پاکستان آن لائن) پوری دنیا میں لاک ڈاون اور معمولات زندگی منجمد ہونے پر اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتیرس ایک بار پھر بول اٹھے۔ پچاس سے زائد افریقی ممالک سے ویڈیو کانفرنس کے ذریعے خطاب کرتے ہوئے انتونیو گوتیرس نے کہا کہ دنیا بھر میں کورونا وائرس کی ویکسین ہی معمولات زندگی بحال کرسکتی ہے۔

ڈان نیوز نے فرانسیسی خبررساں ادارے اے ایف پی کے رپورٹ کے حوالے سے بتایا ہے کہ انتونیو گوتیرس کاکہنا تھا کہ’محفوظ اور موثر ویکسین واحد ہتھیار ہے جو دنیا کو معمول پر لاسکتا ہے، لاکھ لوگوں اور ان گنت کھربوں ڈالر بچا سکتا ہے‘۔انہوں نے اس کی فوری پیداوار اور سب تک رسائی پر زور دیا اور کہا کہ ’اس کا پوری دنیا کو فائدہ ہوگا اور ہم وبا کو قابو کرسکیں گے‘۔

انتونیو گوتیرس نے مزید کہا کہ دنیا کو ایک بھرپور کوشش کی ضرورت ہے، اس بات کو یقینی بنانا ہوگا کہ عالمی سٹیک ہولڈرز باہم مل کر کام کریں تاکہ رواں برس کے اختتام تک ویکسین کو بنایا جاسکے،انہوں نے بتایا کہ اس حوالے سے دنیا سے دو ارب ڈالرز کی اپیل کی گئی تھی جن میں سے بیس فیصد مل چکی ہے۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ عالمی ادارہ صحت سینتالیس افریقی ممالک میں کورونا وائرس سے بچاو کے حوالے سے اقدامات کرچکاہے۔

خیال رہے کہ پورے دنیا میں کورونا وائرس سے 20 لاکھ سے زیادہ متاثرین سامنے آچکے ہیں جبکہ اموات کی تعداد ایک لاکھ 30 ہزار سے زیادہ ہے۔

سب سے زیادہ چھ لاکھ نو ہزار سے زیادہ متاثرین امریکہ میں ہیں جبکہ یہاں ہلاکتوں کی تعداد 26 ہزار سے زیادہ ہیں۔

صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے عالمی ادارہ صحت کے لیے امریکی فنڈنگ روکنے کا اعلان کیا ہے اور کہا ہے کہ اتنے بڑے پیمانے پر ہلاکتوں کا ذمہ دار یہ ادارہ ہے۔ ردعمل میں اقوام متحدہ نے عالمی ادارہ صحت کا دفاع کیا ہے۔

انڈیا اور فرانس نے ملک میں جاری لاک ڈاؤن میں بالترتیب تین اور 11 مئی تک کے لیے توسیع کر دی ہے۔

جنوبی کورونا میں کورونا وائرس کے خوف کے باوجود قومی اسمبلی کے انتخابات ہو رہے ہیں۔ شہری حفاظتی تدابیر کی پیروی کرتے ہوئے پولنگ سٹیشنز میں ووٹ کے عمل میں شریک ہو رہے ہیں۔

مزید :

کورونا وائرس -