سائفر کاپی وزیراعظم کے سپرد ہوئی ہی نہیں،سائفر کاپی جس کے سپرد ہوئی اس کو آپ نے گواہ بنا دیاتو آپ بھگتیں،وکیل سلمان صفدر کے دلائل 

سائفر کاپی وزیراعظم کے سپرد ہوئی ہی نہیں،سائفر کاپی جس کے سپرد ہوئی اس کو آپ ...
سائفر کاپی وزیراعظم کے سپرد ہوئی ہی نہیں،سائفر کاپی جس کے سپرد ہوئی اس کو آپ نے گواہ بنا دیاتو آپ بھگتیں،وکیل سلمان صفدر کے دلائل 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سائفر کیس میں بانی پی ٹی آئی عمران خان اور شاہ محمود قریشی کی سزا کیخلاف اپیلوں  پر سماعت کے دوران وکیل سلمان صفدر نے دلائل دیتے ہوئے کہاکہ سرکار کے اپنے 4گواہ ہیں جو کہتے ہیں کہ سائفر کی کاپی اعظم خان کو دی گئی،سائفر کاپی وزیراعظم کے سپرد ہوئی ہی نہیں،سائفر کاپی جس کے سپرد ہوئی اس کو آپ نے گواہ بنا دیاتو آپ بھگتیں۔

نجی ٹی و ی چینل دنیا نیوز کے مطابق سائفر کیس میں بانی پی ٹی آئی عمران خان اور شاہ محمود قریشی کی سزا کیخلاف اپیلوں پراسلام آباد ہائیکورٹ میں  سماعت ہوئی،چیف جسٹس عامر فاروق اور جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے سماعت کی،چیف جسٹس عامر فاروق نے کہاکہ فائیو ون سی اور ون ڈی میں ایک چارج لگنا ہے،وکیل سلمان صفدر نے کہاکہ یہ دونوں چارج ایک دوسرے کے متضاد ہیں،سائفر اعظم خان کی کسٹڈی میں تھا،اعظم خان نے سائفر وصول کیا،کہا گیا پرنسپل سیکرٹری کو جاری کی گئی سائفر کاپی واپس نہیں آئی،چیف جسٹس ہائیکورٹ نے کہاکہ اعظم خان نے بیان میں کہا کہ انہوں نے کاپی وزیراعظم کو دی تھی جو واپس نہیں آئی۔

عدالت نے استفسار کیا کہ کیا اعظم خان نے کاپی آپ کو دی؟ آپ کی پوزیشن کیا ہے؟وکیل سلمان صفدر نے کہاکہ میری پوزیشن یہ ہے کہ سائفر کاپی وزیراعظم آفس سے گم ہو گئی یہی بات اعظم خان نے کی،جب سائفر کاپی نہیں ملتی تو وزارت خارجہ کو آگاہ کیا جاتا ہے،سپیشل پراسیکیوٹر حامد علی شاہ نے کہاکہ 9مارچ کو سائفر کاپی وزیراعظم کو ڈلیور ہوئی،سلمان صفدر نے کہاکہ سرکار کے اپنے 4گواہ ہیں جو کہتے ہیں کہ سائفر کی کاپی اعظم خان کو دی گئی،سائفر کاپی وزیراعظم کے سپرد ہوئی ہی نہیں،سائفر کاپی جس کے سپرد ہوئی اس کو آپ نے گواہ بنا دیاتو آپ بھگتیں،سائفر گم ہو جائے تو وزارت خارجہ کو رپورٹ کرنا ضروری ہے جو 28مارچ کو ہوا،محکمانہ انکوائری وزارت خارجہ کے اعلیٰ افسران نے کرنی ہے جو نہیں ہوئی،وزارت خارجہ کی جانب سے کوئی ریمائنڈر نہیں آیا جو آنا چاہئے تھا۔

وکیل سلمان صفدر نے کہاکہ اگر ان کا مرکزی الزام کہیں نہیں کھڑا تو لاپرواہی کا چارج تو کھڑا ہو ہی نہیں سکتا،جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے کہاکہ آپ کہہ رہے ہیں ریکارڈ پر ایسا کچھ نہیں کہ سائفر کاپی آپ کے حوالے کی گئی؟وکیل سلمان صفدر نے کہاکہ جی بالکل !میرا یہی پوائنٹ ہے۔