عوامی تحریک کی ڈنڈا بردار فورس اپنے کارکنوں کیلئے ڈھال ثابت ہوئی

عوامی تحریک کی ڈنڈا بردار فورس اپنے کارکنوں کیلئے ڈھال ثابت ہوئی

  

لاہور(محمد نواز سنگرا) عوامی تحریک کی ڈنڈا بردار فورس کام آگئی۔ گوجرانوالہ میں تحریک انصاف کے کارکنوں کو (ن)لیگی کارکنوں کی طرف سے نشانہ بنایا گیالیکن عوامی تحریک کے کارکنوں کو تمام تر سفر میں کسی نے میلی آنکھ سے بھی نہ دیکھا۔ انقلاب مارچ میں ڈنڈا بردار فورس اور اورکارکنوں کا جنون دیکھ کر لیگی کارکن عوامی تحریک کے قافلے میں لوگوں کا جوش و خروش ہی دیکھتے رہ گئے۔ گوجرانوالہ میں پی ٹی آئی اور (ن)لیگ کے کارکنوں کے درمیان تصادم ہوا جبکہ پچھلے دو ماہ سے زیر اعتاب گولیاں اور ڈنڈے کھانے والی عوامی تحریک کی ڈنڈابردار فورس عوامی تحریک کے قائد سمیت کارکنوں کیلئے ایک ڈھال ثابت ہوئی۔عمران خان سے زیادہ طاہر القادری نے شریف برادران کو نشانہ بنایا اور عمران خان پارلیمانی جبکہ طاہر القادری محض ایک مذہبی رہنما ہیں اور (ن) لیگ کے کارکنوں کو عمران خان سے زیادہ طاہرالقادری پر غصہ ہے کیونکہ عوامی تحریک کے سربراہ نے مسلم لیگ(ن) کے قائدین کیخلاف زیادہ واشگاف زبان میں تقریریں کیں جسکا لیگی کارکنوں کو شدید رنج ہے لیکن انقلاب مارچ میں ڈنڈا بردار فورس ،طاہر القادری کے جیالوں کا جوش و جذبہ اور دیگر دفاعی سامان دیکھ کر لیگی کارکنوں کی جرات نہ ہو سکی کی طاہر القادری کے قافلے کونشانہ بنایا جائے اور نتیجتاً لیگی کارکنوں نے پی ٹی آئی کو نشانہ بنا کر اپنا غصہ ٹھنڈا کیا ۔ لاہور سمیت ملک بھر میں مختلف اضلاع میں پولیس کے ہاتھوں نشانہ بننے والی عوامی تحریک کے قافلے کو کسی لاہور سے اسلام آباد تک کے سفر میں کسی بھی کارکن کو خراش تک نہ آئی اور اسطرح طاہر القادری اپنے عقیدت مندوں کی بڑی تعداد لیکر اسلام آباد پہنچ گئے ۔

عوامی تحریک

مزید :

صفحہ آخر -