بیٹی کی قاتل خاتون کی کمرہ عدالت میں جج کے ساتھ شرارتیں

بیٹی کی قاتل خاتون کی کمرہ عدالت میں جج کے ساتھ شرارتیں
بیٹی کی قاتل خاتون کی کمرہ عدالت میں جج کے ساتھ شرارتیں

  

واشنگٹن (نیوز ڈیسک) ایک امریکی خاتون جو کہ اپنی دو سالہ بیٹی کو قتل کرچکی ہے جبکہ دوسری نوعمر بیٹی کو گلا کاٹ کر ہلاک کرنے کی کوشش کرچکی ہے، نے عدالت میں عجب بے حسی اور بے رحمی کا ثبوت دیا اور تمام سماعت کے دوران ناصرف مسکراتی رہی بلکہ ایک موقع پر جج کو آنکھ بھی ماردی۔ پولیس کا کہنا ہے کہ 40 سال جیسیکا سمتھ کا اپنے خاوند کے ساتھ بچوں کی حوالگی کے متعلق جھگڑا چلارہا تھا۔ ایک دن وہ اپنی دونوں بیٹیوں کو کینن بیچ کے ایک تفریحی مقام پر لے کر گئی اور وہاں چھوٹی بیٹی کو ہلاک کردیا جبکہ بڑی کا گلا کاٹنے کی کوشش کی۔ عدالت میں وہ جج کے مختلف سوالات کے مسکرا مسکرا کر جوابات دیتی رہی اور جب جج نے اسے بتایا کہ اسے 30 ستمبر کی پیشی سے پہلے رہا نہیں کیا جائے گا تو اس نے جج کو آنکھ ماردی۔ خاتون کے وکیل کا کہنا ہے کہ وہ اس کے دفاع کیلئے کیس تیار کررہا ہے جس میں اس کی ذہنی حالت کو بھی بنیاد بنایا جاسکتا ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -