گوجرانوالہ واقعہ کی شدید مزمت کرتا ہوں ،انصاف کے تقاضے پورے کئے جائیں گے،شہباز شریف

گوجرانوالہ واقعہ کی شدید مزمت کرتا ہوں ،انصاف کے تقاضے پورے کئے جائیں ...

  

لاہور(پ ر) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے گوجرانوالہ میں پیش آنے والے ناخوشگوار واقعہ کاسخت نوٹس لیتے ہوئے تحقیقات کا حکم دے دیا ہے اور انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب سے رپورٹ طلب کر لی ہے۔انہوں نے کہا کہ گوجرانوالہ کے واقعہ کی شدید مذمت کرتاہوں اورمیں نے بلاتاخیرآئی جی پنجاب کوہدایت کی ہے کہ اس واقعہ میں انصاف کے تقاضے پورے کیے جائیں۔ پتھراؤ کرنے والوں کو گرفتارکیا جائے اور صورتحال پر فوری قابو پانے کیلئے تمام ضروری اقدامات اٹھائے جائیں اور تحریک انصاف کے جلوس کو اضافی سکیورٹی فراہم کی جائے۔انہوں نے کہا کہتحریک انصاف کے جلوس کوفول پروف سکیورٹی فراہم کرنا ہماری ذمہ داری ہے ۔اس ضمن میںآئی جی پنجاب اورصوبائی انتظامیہ تحریک انصاف کی قیادت سے فی الفور رابطہ کر کے مزید سکیورٹی فراہم کرنے کے حوالے سے فی الفوراقدامات اٹھائے۔ وزیراعلیٰ نے جی ٹی روڈ پر جلوس کے راستے میں واقع مسلم لیگ(ن) کے تمام دفاتربند کرنے کی ہدایت کی ہے اور آئی جی پنجاب اورصوبائی انتظامیہ سے کہا ہے کہ جلوس گزرنے تک روٹ کے راستے میں واقع مسلم لیگ(ن) کے تمام دفاترکی بندش کو ہر صورت یقینی بنایا جائے۔انہوں نے کہا کہ امن عامہ کا قیام ہماری اولین ذمہ داری ہے اورامن وامان کی صورتحال کے قیام کی ذمہ داری ہر صورت نبھائیں گے۔کسی کو امن سے کھیلنے کی اجازت دو ں گا نہ قانون ہاتھ میں لینے کی ۔وزیراعلیٰ نے واقعہ کی اطلاع ملتے ہی گوجرانوالہ ڈویژن کے پولیس حکام اور انتظامیہ کو بھی فی الفور موقع پر پہنچنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ صورتحال کو کنٹرول کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ ناخوشگوار واقعہ افسوسناک ہے اور قانون سے کوئی بالاتر نہیں اور ذمہ داروں کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی عمل میں لائی جائے گی اورشرپسندوں کوقانون کی گرفت میں لایا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ اگرپولیس کی گاڑی سے پتھراؤ کا واقعہ پیش آیا ہے تو اس کی بھی مکمل تحقیقات کرائی جائے گی۔ وزیراعلیٰ نے مسلم لیگ (ن) کے کارکنوں کو پرامن رہنے کی تلقین کرتے ہوئے کہا کہ وہ تحمل اور برداشت کا دامن نہ چھوڑیں۔کارکن اشتعال انگیز حرکتوں اوراقدامات سے متاثر نہ ہوں اور ردعمل کا مظاہر ہ نہ کریں۔پاکستان کے نام پر اپیل ہے کہ عوام اور کارکن پر امن رہیں اورصبر کا دامن ہاتھ سے نہ چھوڑا جائے وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا ہے کہ عوام نے سونامی مارچ اور نام نہاد انقلاب مارچ سے لاتعلقی کا اظہار کرکے انہیں مسترد کردیا ہے ۔قوم کیمرے کی آنکھ سے دیکھ چکی ہیں کہ ان بے وقت کے لانگ مارچ اورنام نہاد انقلاب کے ساتھ کتنے لوگ ہیں۔ملین مارچ کا خواب دیکھنے والوں کو صرف شرمندگی اورمایوسی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔بعض عناصرپاکستان کی تاریخ کے اہم دن 14اگست کے موقع پر قوم کو تقسیم کرنا اورملک میں افراتفری اور محاذ آرائی کی صورتحال پیدا کرنا چاہتے تھے لیکن پاکستان کے باشعور عوام نے ان کے یہ عزائم ناکام بنادئیے۔آزادی مارچ اورانقلاب مارچ جلد اپنی سیاسی موت خود مر جائیں گے۔بے وقت کے مارچوں اور نام نہاد انقلاب کے حوالے سے جلد دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوجائے گا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے یہاں پاکستان مسلم لیگ(ن) کے اراکین اسمبلی ،پارٹی عہدیداروں اور کارکنوں کے ایک وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے کہا کہ سونامی مارچ آغاز ہی میں سو چکا ہے اور نام نہاد آزادی و انقلاب مارچ کی ناکامی ان کا مقدر بن چکی ہے۔ تحریک انصاف اور عوامی تحریک کے گٹھ جوڑ سے بلی تھیلے سے باہر آ گئی ہے اور پوری قوم کے سامنے غیر جمہوری اور غیرآئینی مطالبات کرنے والوں کے اصل چہرے اور مذموم عزائم بے نقاب ہو گئے ہیں۔ ٹیکنو کریٹ حکومت کا مطالبہ کر کے عمران خان نے غیر جمہوری اور غیر آئینی طرز عمل کا مظاہرہ کیاہے۔وزیر اعظم کے استعفیٰ دینے یا مڈٹرم الیکشن کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا کیونکہ پاکستان کے عوام نے مسلم لیگ (ن) کوبھاری مینڈیٹ دیا ہے۔ چند مٹھی بھر عناصر اپنی انا کی تسکین کی خاطر پوری قوم کو یرغمال نہیں بنا سکتے۔حکومت ہر اقدام آئین اور قانون کے دائرے میں رہ کر اٹھا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان نے سیاست میں جھوٹ بولنے کے تمام ریکارڈ توڑ دیئے ہیں اور وہ اب اخلاقیات کی بھی حدیں پھلانگ گئے ہیں۔ تحریک انصاف اور عوامی تحریک کے مطالبات غیر آئینی ہیں۔ عمران خان اور تحریک انصاف کی قیادت خیبر پختونخوا حکومت کی بدترین کارکردگی کو چھپانے کی آڑ میں احتجاج کر رہے ہیں لیکن عوام بخوبی جانتے ہیں کہ انتشار کون پھیلا رہا ہے اور بے لوث خدمت کون کر رہا ہے؟ وزیراعلیٰ نے کہا کہ موجودہ حالات میں جب پاک افواج دہشت گردوں کے خلاف جنگ میں مصروف ہیں اور آپریشن ضرب عضب میں کامیابیاں حاصل کر رہی ہیں ان حالات میں ملک کسی بھی انارکی یا افراتفری کا متحمل نہیں ہو سکتا۔ اتحاد اور اتفاق کی جتنی ضرورت آج ہے شاید اس سے پہلے کبھی نہ تھی لیکن ناعاقبت اندیش عناصر صرف سیاست برائے اقتدار کیلئے ملک و قوم کی تقدیر کو داؤ پر لگا رہے ہیں۔ پاکستان کے باشعور عوام نے بے وقت کے لانگ مارچ اور نام نہاد انقلاب کا ساتھ نہیں دیا اور قوم ملک میں عدم استحکام پیدا کرنے کی کوئی بھی کوشش کامیاب نہیں ہونے دے گی۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ بے وقت کے مارچ اورنام نہاد انقلاب کے دعویداروں کو عوام کے مسائل سے کوئی د لچسپی نہیں۔ عمران خان نے جن کو چور ڈاکو کہا آج وہ انہی کے ساتھ کھڑے ہیں۔ تحریک انصاف اور عوامی تحریک کے مارچ کا مقصد ملک میں انتشار پیدا کرنے کے سوا کچھ نہیں۔ انتشار پھیلانے کی سازش کرنے والوں کی گود میں وہ عناصر بیٹھے ہوئے ہیں جنہوں نے دورآمریت میں پنجاب کو سب زیادہ کرپٹ صوبہ بنا دیاتھا۔ عمران خان ہزاروں پاکستانیوں کے خون سے ہاتھ رنگنے والوں سے تو بات چیت کے حامی ہیں لیکن منتخب حکومت کے ساتھ ڈائیلاگ کے لئے تیار نہیں ،جو ان کے قول وفعل کا بہت بڑا تضاد ہے۔ پاکستا نی عوا م ایسے ہر مارچ کو نا کام بنا دیں گے جس کا مقصد پاکستان کی معیشت کو ترقی کے سفر سے روکنا ہو۔ پاکستان کو اس وقت صرف ایک لانگ مارچ کی ضرورت ہے اوروہ لانگ مارچ ہے ترقی کا ‘ عوام کی خوشحالی کا‘ دہشت گردی کے سد باب کا اور اندھیروں کے خلاف جدوجہد کا۔ہمیں کسی قسم کا کوئی خوف نہیں، ہمیشہ صدق دل کے ساتھ عوام کی بے لوث خدمت کی ہے، آئندہ بھی کرتے رہیں گے۔ ہمارا جینا مرنا عوام کے ساتھ تھا ،ہے اوررہے گا۔ عوام ملک کی ترقی میں حائل ہونے والی تمام رکاوٹوں کو گرا دیں گے۔ ملک کی 68 سالہ تاریخ میں یہ پہلا موقع ہے کہ یوم آزادی کو متنازع بنا کر محض اپنی ذاتی انا کی خاطر قوم کو تقسیم کرنے کی کوشش کی گئی ۔ اگر ملک عدم استحکام کاشکارہوا تو قوم اور تاریخ عمران اورقادری سمیت ان کے حواریوں کو معاف نہیں کرے گی۔انتشار اورافراتفری کی سیاست سے ملک میں فسادپیدا کرنے کی ناپاک سازش کی جارہی ہے۔ ملک کو استحکام کی ضرورت ہے انتشار کی نہیں۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے پشاور میں شدید بارشوں سے ہونے والے جانی نقصان پرافسوس کا اظہار کیا ہے ۔ یہاں ایک بیان میں انہو ں نے کہاکہ مجھے پشاور میں طوفان بادوباراں سے ہونے والے جانی و مالی نقصان کا دلی دکھ ہوا ہے ۔ وزیراعلی نے کہاکہ میری اور صوبہ پنجاب کے عوام کی ہمدردیاں جاں بحق ہونے والوں کے لواحقین اور زخمیوں کے ساتھ ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ ہم حکومت پنجاب کی طرف سے متاثرین کے لئے امدادی سامان کے 12 ٹرک بھیج رہے ہیں

مزید :

صفحہ اول -