فوج بھی ملک میں غیرآئینی تبدیلی کی مخالف ہے : چوہدری سرور

فوج بھی ملک میں غیرآئینی تبدیلی کی مخالف ہے : چوہدری سرور
فوج بھی ملک میں غیرآئینی تبدیلی کی مخالف ہے : چوہدری سرور

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک ) گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور کا کہنا ہے کہ ہم سب جمہوریت پریقین رکھتے ہیں، فوج بھی ملک میں غیرآئینی تبدیلی کی مخالف ہے ۔ جماعت اسلامی کے مرکز منصورہ میں گورنر چوہدری محمد سرور نے امیر جماعت اسلامی سراج الحق سے ملاقات کی اور حکومت کی جانب سے تحریک انصاف کے مطالبات سے متعلق اہم پیغام پہنچایا۔ ملاقات کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے گورنر پنجاب نے کہا کہ اسلام کی ترویج میں جماعت اسلامی کا کردار نا صرف پاکستان بلکہ بیرون ملک بھی بہت اہم ہے، جماعت اسلامی ملکی سیاست میں بھی اہم کردار ادا کررہی ہے، تمام جمہوری قوتیں ملک میں جمہوریت کو پروان چڑھانے پرمتفق ہیں، ہم سب انتخابی اصلاحات چاہتے ہیں اور حکومت بھی تحریک انصاف کے چند ایک کے علاوہ تمام مطالبات پر متفق ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ جب سیاسی قوتیں مذاکرات کریں گی تو آئینی مطالبات مانے جائیں گے۔اس موقع پر امیر جماعت اسلامی سراج الحق کا کہنا ہے کہ گورنر پنجاب نے موجودہ بحران پر مثبت بات کی ہے،اسلام آباد میں 2 سیاسی جماعتوں کے کارکن آئے ہیں کسی دوسرے ملک کی فوج نے چڑھائی نہیں کی لہذا حکومت کو دیکھنا چاہئے کہ ایسا کوئی اقدام نہ اٹھائیں جس سے تصادم کی فضا پیدا ہو، وزرا کو بھی چاہیئے کہ وہ اپنے رویوں اور الفاظ پر نظر ثانی کریں اور معاملات کو آگے لے جانے کے صبر و تحمل سے کام لیں۔ان کا مزید کہنا تھا کہ دونوں فریقین عوام کے حقوق، جمہوریت اورآئین کی کی بات کرتے ہیں، ڈاکٹر طاہر القادری کی باتیں بھی مثبت ہیں اور یہ عوامی ایجنڈا ہیں، ہم ان کے نکات کی بھی حمایت کرتے ہیں۔امیر جماعت اسلامی کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف نے دھاندلی کے خلاف انتخابی اصلاحات اور الیکشن کمیشن کی تشکیل نو پر حمایت کی، وقت آگیا ہے کہ ہم ایسا انتخابی نظام تشکیل دیں کہ کوئی دھاندلی کا الزام نہ لگاسکیں اور آئئندہ انتخابات ہر قسم کے شک و شبے سے پاک ہوں،انتخابی اصلاحات صرف تحریک انصاف کا نہیں تمام جمہوری جماعتوں کا مطالبہ نہیں ہے ، مطالبات پیش کرنے پر آئینی لحاظ سے ممانعت نہیں ہے اور مطالبات ہمیشہ برسراقتدار لوگوں سے ہی کئے جاتے ہیں ۔

مزید :

لاہور -اہم خبریں -