مصر : رابعہ قتل عام کی برسی ، مظاہرین پراشک آور گیس کی شیلنگ

مصر : رابعہ قتل عام کی برسی ، مظاہرین پراشک آور گیس کی شیلنگ

قاہرہ( آن لائن )مصر میں پولیس نے مقتولین رابعہ العدویہ اسکوائر کی دوسری برسی کے موقع پر احتجاجی مظاہرے کرنے والے سابق حکمراں جماعت اخوان المسلمون کے حامیوں کو اشک آور گیس کی شیلنگ کرکے منتشر کردیا ہے۔دارالحکومت قاہرہ میں برطرف صدر ڈاکٹر محمد مرسی کے حامی سیکڑوں مقتولین کی دوسری برسی کے موقع پر سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے اور اخوان المسلمون کے حامیوں کو احتجاجی مظاہروں سے روکنے کے لیے اہم شاہراہوں اور سرکاری عمارتوں پر پولیس کی اضافی نفری تعینات کی گئی تھی۔پولیس حکام کے مطابق برطرف صدر ڈاکٹر محمد مرسی کے حامیوں نے قاہرہ کے مغربی علاقے میں تین چھوٹی ریلیاں نکالی تھیں اور ان میں درجنوں مظاہرین ہی شریک تھے۔پولیس نے ان پر اشک آور گیس کے گولے پھینک کر انھیں منتشر کردیا ہے۔پولیس حکام کا کہنا ہے کہ قاہرہ کے شمال میں ڈاکٹر محمد مرسی کے حامیوں نے ایک احتجاجی مظاہرہ کیا تھا اور انھوں نے پولیس اہلکاروں کی جانب پٹاخے پھینکے ہیں۔انھیں بھی اشک آور گیس کے گولے پھینک کر منتشر کردیا گیا ۔

ہے۔واضح رہے کہ پولیس نے 14 اگست 2013ء4 کو قاہرہ کے مشہور رابعہ العدویہ چوک میں اخوان المسلمون کے سیکڑوں حامیوں کے احتجاجی کیمپ کو بزور طاقت اکھاڑ پھینکا تھا اور دھرنا دینے والیسیاسی کارکنان پر گولیاں چلا دی تھیں اور ان پربلڈوزر چڑھا دیے تھے۔اس کارروائی میں مصری حکومت کے سرکاری اعداد وشمار کے مطابق سات سو افراد ہلاک ہوئے تھے جبکہ اخوان نے مہلوکین کی تعداد چودہ سو اور دو ہزار کے درمیان بتائی تھی۔

مزید : عالمی منظر