جشن آزادی کی تقریبات میں فائرنگ 3 افراد جاں بحق، ایک ملزم نے خودکشی کر لی

جشن آزادی کی تقریبات میں فائرنگ 3 افراد جاں بحق، ایک ملزم نے خودکشی کر لی
جشن آزادی کی تقریبات میں فائرنگ 3 افراد جاں بحق، ایک ملزم نے خودکشی کر لی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

ملتان ، کراچی ، راولپنڈی (ویب ڈیسک) یوم جشن آزادی کی تقریب میں فائرنگ سے بچے سمیت دو افراد جاں بحق ، ایک بچہ ، ملزم نے خود کو بھی گولی مار کر ہلاک کر لیا، آزادی کی تقریب ماتم میں تبدیل ہو گئی، پولیس نے ملزم کے باپ اور بھائی کو گرفتار کر کے کارروائی شروع کر دی ۔ کراچی، راولپنڈی سمیت دیگر مقامات پر بھی فائرنگ ‘ حادثات میں 50 سے زائد لو گ زخمی ہو گئے۔ معلوم ہوا ہے کہ ایک این جی او کے سربراہ اور فیکٹری مالک ملک سلیم رجب اعوان نے یوم آزادی کے موقع پر لودھراں کے علاقے دنیا پور میں اپنے آبائی چک 384 ڈبلیو بی میں اپنے کزن شفیق اعوان کے ملکیتی خالی پلاٹ میں اپنے گاﺅں کے غریب و ناداد لوگوں کیلئے تقریب منعقد کی۔

فنکشن میں جب مہمان خصوصی سلیم رجب اعوان نے ڈائس پر آکر تقریر شروع کی تو اسی چک کا رہائشی ندیم اقبال جو بطورڈرائیور سلیم رجب اعوان کی فیکٹری میں ملازم تھا اور دو ماہ قبل نوکری سے فارغ کر دیا گیا تھا نے ڈائس کے عقب میں لگی قناتوں کے درمیانی خلا سے سلیم رجب پرپسٹل تیس بور سے فائر کئے جس سے سلیم رجب شدید زخمی ہو کر گر پڑا ۔ جس کے نتیجے میں سلیم رجب کے سامنے بیٹھے ہوئے اسی چک کے دو بچے 11 سالہ جہانزیب اور 12 سالہ عرفان شدید زخمی ہو گئے۔ اس اثنا میں ندیم اقبال فرار ہونے لگا تو گاﺅں کے لوگوں نے اس کا تعاقب کیا جس پر ندیم اقبال بھاگتے ہوئے افتخار اعوان کے قریبی گھر میں گھس گیا اور اپنے آپ کو ایک کمرے میں بند کر کے اندر سے کنڈی لگالی اور اپنے آپ کو کنپٹی پر گولی مار کر خودکشی کر لی۔ اطلاع ملنے پر پولیس موقع پر پہنچ کر دروازہ توڑ کر اندر گئی تو ملزم ندیم کی نعش بیڈ پر پڑی ہوئی تھی۔ زخمیوں کو نشتر ہسپتال لایا گیا لیکن رجب سلیم اور بارہ سالہ بچہ جاں بحق ہو گئے جبکہ جہاں زیب کی حالت تسلی بخش بتائی جا تی ہے۔ مقامی پولیس نے ملزم ندیم اقبال کے والد اور بھائی کو گرفتار کر کے کارروائی شروع کر دی ہے ۔ ملزم ندیم اقبال کا چھوٹا بھائی نعیم اقبال رجب سلیم کی فیکٹری میں ابھی تک ملازم ہے۔ واقعہ کی اطلاع ملنے پر مقتولین کے گھر میں کہرام مچ گیا اور علاقہ میں خوف و ہراس کی فضا پھیل گئی اس ضمن میں تھانہ بستی ملوک نے تحقیقات شروع کر دی ہیں۔

کراچی میں جشن آزادی کے موقع پر ہفتے اور اتوار کی درمیانی شب فائرنگ کے نتیجے میں ایک شخص جاں بحق اور درجن سے زائد زخمی ہو گئے۔ پولیس کے مطابق جشن آزادی کی تقریب میں ہوائی فائرنگ کی زد میں آکر جمشید کوارٹر کے علاقے بلوچ پاڑہ 25 سالہ نوجوان جاں بحق اور 40 سالہ ثروت زوجہ امین زخمی ہو گئی۔ دوسری طرف پرانی سبزی منڈی کے قریب 40 سالہ رحمت اللہ زخمی ہو گیا۔ شریف آباد میں فائرنگ کے نتیجے میں 15 سالہ عزیز احمد زخمی ہو گیا ۔ منچلوں اور نوجوانوں نے یوم آزادی مناتے ہوئے آتش بازی ، ہوائی فائرنگ اور ون ویلنگ بھی کی جس کے نتیجے میں راولپنڈی میں ایک خاتون اور متعدد بچوں سمیت 40 کے قریب افراد زخمی ہو گئے۔ ایک خاتون اور بچہ ربڑ کی گولی سے زخمی ہوئے جب کے دیگر لوگ ایکسیڈنٹ اور ہوائی فائرنگ کے نتیجے میں زخمی ہوئے۔

مزید : جرم و انصاف