’اب میں معجزہ کرکے دکھاﺅں گا‘ یہ کہہ کر پادری نے نوجوان لڑکی پر بھاری بھرکم سپیکر رکھ دیا، پھر کیا ہوا؟ جان کر آپ بھی حیران پریشان رہ جائیں گے

’اب میں معجزہ کرکے دکھاﺅں گا‘ یہ کہہ کر پادری نے نوجوان لڑکی پر بھاری بھرکم ...
’اب میں معجزہ کرکے دکھاﺅں گا‘ یہ کہہ کر پادری نے نوجوان لڑکی پر بھاری بھرکم سپیکر رکھ دیا، پھر کیا ہوا؟ جان کر آپ بھی حیران پریشان رہ جائیں گے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

کیپ ٹاﺅن (نیوز ڈیسک) مذہب کے نام پر فراڈ کرنے والے شیطان صفت مجرم لوگوں کو صرف گمراہ ہی نہیں کرتے بلکہ اُن کی جان کے لئے بھی خطرہ ثابت ہوسکتے ہیں۔ جنوبی افریقہ میں ایک ایسے ہی شیطان پادری نے ایک ’معجزہ‘ دکھاتے ہوئے ایک نوجوان لڑکی کی جان لے لی۔

ویب سائٹ گھانا سٹار کے مطابق ماﺅنٹ زائن چرچ کا پادری لتھیبو رابلانگو اپنے سامنے جمع سینکڑوں پیروکاروں کو بتارہا تھا کہ اگر وہ اس پر پختہ یقین رکھتے ہیں تو انہیں دنیا کی کوئی بھی صعوبت تکلیف نہیں پہنچاسکتی۔ اس نے اپنے شیطانی دعوے کے ثبوت کے طور پر حاضرین میں موجود ایک نوجوان لڑکی کو سٹیج پر بلایا اور لیٹ جانے کو کہا۔ پھر اس نے ایک انتہائی وزنی سپیکر لڑکی کے ناتواں جسم پر یہ کہتے ہوئے رکھوادیا کہ اسے ہرگز کوئی تکلیف نہ ہوگی۔ بدبخت پادری نے محض اسی پر اکتفا نہیں کیا بلکہ لڑکی کے جسم پر رکھے انتہائی بھاری سپیکر کے اوپر خود بھی چڑھ کر بیٹھ گیا اور تقریباً 5منٹ تک اسی حالت میں حاضرین سے خطاب کرتا رہا۔

برطانیہ کی فحش ترین اداکارہ جس کی بے باکی نے گوروں کو بھی پریشان کردیا، اُس کا شوہر پاکستانی نکلا، میڈیا پر حقیقت سامنے آتے ہی ایسی بات کہہ دی کہ جان کر آپ کے بھی کان لال ہوجائیں گے

اس دوران وہ اپنے پیروکاروں کو بتاتا رہا کہ یہ اس کا معجزہ ہے کہ ایسے بھاری وزن کے باوجود لڑکی کو کوئی تکلیف نہیں ہورہی، حالانکہ وہ بیچاری اس وقت تک دنیا سے رخصت ہوچکی تھی۔ جب بالآخر یہ کمبخت نیچے اترا اور لڑکی کے جسم سے سپیکر ہٹایا گیا تو اس کا جسم بے حس و حرکت تھا۔ اگرچہ شیطان صفت پادری نے لڑکی کو اٹھنے کا کئی بار حکم دیا مگر وہ تو دنیا سے ہی اُٹھ چکی تھی۔

بدقسمت لڑکی کو جب ہسپتال لیجایاگیا تو ڈاکٹروں نے بتایا کہ بھاری وزن کے باعث اس کی پسلیاں ٹوٹ گئی تھیں اور پھیپھڑے ناکارہ ہونے سے اس کی موت واقع ہوگئی تھی۔ شیطان کے پیروکار پادری کی مکاری کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ لڑکی کی ناحق موت کو اس نے اس کے کمزور عقیدے کا نتیجہ قرار دے دیا، یعنی ایک بے گناہ انسان کے لرزہ خیز قتل کے بعد بھی وہ دھوکہ دہی سے باز نہیں آیا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس