استحکام پاکستان کے لئے ہر قسم کی قربانی دینے کا عزم

استحکام پاکستان کے لئے ہر قسم کی قربانی دینے کا عزم

پاکستان کا 70واں یوم آزادی شان و شوکت سے منایا گیا یوم آزادی کے سلسلے میں منعقد کی گئی تقریبات میں فنکاروں کا جوش وخروش عروج پرنظر آیا ۔شوبز کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی شخصیات یوم آزادی کو اپنے اپنے انداز میں بے پناہ جوش و جذبے کے ساتھ مناتی ہیں۔یوم آزادی کے حوالے سے ایک پروقار تقریب تماثیل تھیٹر میں منعقد کی گئی ۔تماثیل تھیٹر میں فنکاروں نے یوم آزادی کا کیک کاٹا۔ کیک کاٹنے کی رنگارنگ تقریب تماثیل تھیٹر میں گزشتہ شب منعقد ہوئی جس میں ماہ نور،قسمت بیگ،گلفام،قیصر ثناء اللہ ،طاہر انجم،جونی ملک ،سجاد سمراٹ ،عرفان،بینا سحر،عابد،وحید اور دیگر نے مل کر کیک کاٹا۔اس تقریب کا اہتمام اداکارہ،ماڈل اور پرفارمر ماہ نور نے کیا تھا۔فنکاروں نے کہا ہے کہ تماثیل تھیٹر میں پاکستان کا یوم آزادی جوش و خروش و جذبے سے منانے کا اہتمام کیا گیا ہے۔ پاکستان ہے تو ہم سب ہیں۔ پوری قوم کو یوم آزادی شایان شان طریقے سے منانا چاہیے۔ قیصر ثناء اللہ نے کہا کہ یوم آزادی کے سلسلے میں تماثیل تھیٹر کو قومی پرچموں سے سجایا گیا تھا۔اس موقع پر ’’پاکستان‘‘سے گفتگو کرتے ہوئے نامور اداکارہ،ماڈل اور پرفارمر ماہ نور نے کہا کہ آزادی ایک نعمت ہے ہمیں اس کی قدر کرنی چاہیے نوجوان نسل کو کیا معلوم کہ ہمارے بزرگوں نے کتنی قربانیوں کے بعد یہ ملک حاصل کیا تھامیں ہر سال جشن آزادی پورے اہتمام سے مناتی ہوں آج ہم جس ملک کی قدر نہیں کررہے اس میں ہمارا قصور نہیں بلکہ یہ ہمیں بغیر کسی جد وجہد کے مل گیا ہے اس کی بنیادوں میں ہمارے اسلاف کا خون شامل ہے قائد اعظم محمد علی جناح کی ولولہ انگیز قیادت نہ ہوتی تو آج بھی ہم انگریزوں کی یا پھر ہندؤں کی غلامی کررہے ہوتے ۔قسمت بیگ نے کہا کہ ہندوستان اور پاکستان کو آزاد ہوئے70سال سے زیادہ عرصہ ہوچکا ہے اس عرصے میں دونوں ممالک نے جنگ کی وجہ سے بہت کچھ کھو دیا ہے ہمیں ماضی کو بھُلا کر نئے دور کا آغاز کرنا چاہیے امن و امان میں ہی آنے والی نسلوں کا بہتر مستقبل پوشیدہ ہے،قیصر ثنا ء اللہ نے کہا کہ جنگ نہیں بلکہ مذاکرات پاک بھارت مسائل کا حل ہیں اچھے پڑوسیوں کو لڑائی کی بجائے پیار سے رہنا چاہیے ہمیں یوم آزادی کو منا کر اپنے بزرگوں کی قربانیوں کو یاد کرتا ہوں،بینا سحرنے کہا کہ پوری قوم کو یہ دن جوش و خروش سے منانا چاہیے،ہنی البیلا نے کہا کہ میں ہر سال یوم آزادی کے سلسلے میں گھر والوں کے ساتھ خوشی مناتا ہوں زندہ قومیں اپنی آزادی کے دن کو کبھی نہیں بھلاتیں جو کوئی ہماری آزادی کی جانب میلی آنکھ سے دیکھے گا ہم اُس کی آنکھیں نکال دیں گے،قیصر پیاء نے کہا کہ آزادی کا ایک دن غلامی کی سو سالہ زندگی سے بہتر ہے بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح اور شاعر مشرق علامہ محمد اقبال کے خوابوں کے تعبیر اس ملک کی آزادی کو ختم کرنے لئے دشمن دن رات کوشاں ہے ہم سب کو مل کر اس ملک کی آزادی کی حفاظت کرنا ہوگی،کوریوگرافرسجاد سمراٹ نے کہا کہ یہ ملک اسلام کے نام پر بنا ہے اور تا قیامت قائم و دائم رہے گا دشمن لبھی اس کو ختم نہیں کرسکتا موجودہ دہشت گردی کے ماحول میں بھی پوری قوم آج کے دن اپنا یوم آزادی منا کر ثابت کردے گی کہ زندہ قومیں کسی بھی حالت میں ہمت اور حوصلے کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑتیں،طاہر انجم نے کہا کہ آزادی جیسی نعمت کوئی اور نہیں ہے جو اس کی قدر نہیں کرتا وہ دنیا اور آخرت دونوں میں رسوا ہوتا ہے پاکستانی قوم زندہ دل اور بہادر ہے یہ اپنی آزادی کی حفاظت کرنا جانتی ہے دہشت گرد جان لیں جب انگریز جیسی سُپر پاور مسلمانوں کو غلام نہ بنا سکی تو مُٹھی بھر دہشت گرد اس ملک کو کیا ختم کریں گے۔ماہ نور نے مزید کہا کہ میں ہر سال جشن آزادی جوش وخروش سے مناتی ہوں۔ آزاد ملک میں جینے کا اپنے مزا ہے میں ساری پاکستانی قوم کو آج کے دن کی مبارکباد پیش کرتی ہوں۔ قوم کو جشن آزادی کی خوشیاں مناتے دیکھ دل باغ باغ ہوجاتا ہے میرا مرنا جینا اس ملک کے ساتھ ہے میں ان لوگوں پر لعنت بھیجتی ہوں جو اس کا کھا کر اسی کے خلاف باتیں کرتیں ہیں،نرمانے کہا کہ زندہ قومیں اپنا ہوم آزادی شان و شوکت سے مناتی ہیں،وحیدنے کہا جس کو اس ملک سے اختلاف ہے اُس کو یہاں رہنے کا کوئی حق نہیں میں اپنے دفترمیں آزادی کا جشن مناؤں گا،عابدنے کہا کہ ہم سب کو اس یوم آزادی پر عہد کرنا ہوگا کہ ہم اپنے وطن کو عظیم سے عظیم تر بنائیں گے پوری قوم کو باہمی اختلافات بھُلا کر 14اگست 2016سے صرف اور صرف پاکستان کی فلاح و بہبود کے لئے کام کرنا ہوگا یہ ملک ہے تو ہم ہیں اس وقت ہم بہت سارے مسائل کا شکار ہیں آج کے دن سب کو دعا کرنی چاییے کہ آنے والا سال ہمارے لئے خوشیاں ہی خوشیاں لائے دشمن اور حاسدین کی تمام سازشیں ناکام ہوں۔۔ان سب فنکاروں کا کہنا ہے کہ اس سبز ہلالی پرچم کے سائے تلے ہم ایک ہیں اور قیامت تک ایک ہی رہیں گے ہم عزم کرتے ہیں کہ اس ملک کی سلامتی کے لئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے ،اداکارہ ،ماڈل وپرفارمر ماریہنے کہا کہ آزادی ایک نعمت ہے ہمیں اس کی قدر کرنی چاہیے نوجوان نسل کو کیا معلوم کہ ہمارے بزرگوں نے کتنی قربانیون کے بعد یہ ملک حاصل کیا تھامیں ہر سال جشن آزادی پورے اہتمام سے مناتی ہوں،اچھی خان نے کہا کہ آج ہم جس ملک کی قدر نہیں کررہے اس میں ہمارا قصور نہیں بلکہ یہ ہمیں بغیر کسی جد وجہد کے مل گیا ہے اس کی بنیادوں میں ہمارے اسلاف کا خون شامل ہے قائد اعظم محمد علی جناح کی ولولہ انگیز قیادت نہ ہوتی تو آج بھی ہم انگریزوں کی یا پھر ہندؤں کی غلامی کررہے ہوتے،اچھی خان نے کہا کہ ہندوستان اور پاکستان کو آزاد ہوئے70سال سے زیادہ عرصہ ہوچکا ہے اس عرصے میں دونوں ممالک نے جنگ کی وجہ سے بہت کچھ کھو دیا ہے ہمیں ماضی کو بھُلا کر نئے دور کا آغاز کرنا چاہیے امن و امان میں ہی آنے والی نسلوں کا بہتر مستقبل پوشیدہ ہے،اداکارطاہر انجم نے کہا کہ جنگ نہیں بلکہ مذاکرات پاک بھارت مسائل کا حل ہیں اچھے پڑوسیوں کو لڑائی کی بجائے پیار سے رہنا چاہیے ہمیں یوم آزادی کو منا کر اپنے بزرگوں کی قربانیوں کو یاد کرتا ہوں،ماہ نور نے کہا کہ پوری قوم کو یہ دن جوش و خروش سے منانا چاہیے آزادی کا ایک دن غلامی کی سو سالہ زندگی سے بہتر ہے بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح اور شاعر مشرق علامہ محمد اقبال کے خوابوں کے تعبیر اس ملک کی آزادی کو ختم کرنے لئے دشمن دن رات کوشاں ہے ہم سب کو مل کر اس ملک کی آزادی کی حفاظت کرنا ہوگی۔جونی ملک نے کہا کہ یہ ملک اسلام کے نام پر بنا ہے اور تا قیامت قائم و دائم رہے گا دشمن لبھی اس کو ختم نہیں کرسکتا موجودہ دہشت گردی کے ماحول میں بھی پوری قوم آج کے دن اپنا یوم آزادی منا کر ثابت کردے گی کہ زندہ قومیں کسی بھی حالت میں ہمت اور حوصلے کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑتیں۔ آزادی جیسی نعمت کوئی اور نہیں ہے جو اس کی قدر نہیں کرتا وہ دنیا اور آخرت دونوں میں رسوا ہوتا ہیپاکستانی قوم زندہ دل اور بہادر ہے یہ اپنی آزادی کی حفاظت کرنا جانتی ہے دہشت گرد جان لیں جب انگریز جیسی سُپر پاور مسلمانوں کو غلام نہ بنا سکی تو مُٹھی بھر دہشت گرد اس ملک کو کیا ختم کریں گے۔ آزاد ملک میں جینے کا اپنے مزا ہے میں ساری پاکستانی قوم کویوم آزادی کی مبارکباد پیش کرتا ہوں قوم کو جشن آزادی کی خوشیاں مناتے دیکھ دل باغ باغ ہوجاتا ہے میرا مرنا جینا اس ملک کے ساتھ ہے میں ان لوگوں

پر لعنت بھیجتاہوں جو اس کا کھا کر اسی کے خلاف باتیں کرتیں ہیں۔قسمت بیگ نے کہا کہ زندہ قومیں اپنا ہوم آزادی شان و شوکت سے مناتی ہیں جس کو اس ملک سے اختلاف ہے اُس کو یہاں رہنے کا کوئی حق نہیں ہے۔ قیصر ثناء اللہ نے کہا کہ ہم سب کو اس یوم آزادی پر عہد کرنا ہوگا کہ ہم اپنے وطن کو عظیم سے عظیم تر بنائیں گے۔ پوری قوم کو باہمی اختلافات بھُلا کر 14اگست 2016سے صرف اور صرف پاکستان کی فلاح و بہبود کے لئے کام کرنا ہوگا یہ ملک ہے تو ہم ہیں۔

مزید : ایڈیشن 1